امریکی شہر ہیوسٹن میں شدید بارشوں سے پانچ ہلاک

تصویر کے کاپی رائٹ
Image caption 70 سے زائد گھوڑوں کو سیلاب سے بچایا گیا

امریکی ریاست ٹیکسس کے شہر ہیوسٹن میں شدید بارشوں کی وجہ سے پانچ افراد ہلاک ہوئے ہیں اور متاثرہ علاقوں میں شدید سیلاب کی صورت حال ہے۔

ہیوسٹن کا شہر بہت زیادہ متاثر ہوا ہے جہاں ریاست کے گورنر گریک ایبٹ نے ہنگامی حالت کا اعلان کیا ہے۔

محکمہ موسمیات کے حکام کے مطابق پیر کے روز ہیوسٹن میں تقریباً 17 انچ بارش ہوئی جو ایک تاریخی واقعہ ہے۔

ڈاؤن ٹاؤن ہیوسٹن کی دریاؤں میں طغیانی کے سبب کئی علاقوں میں پانی کی سطح بڑھ گئی ہے جہاں تقریبا 1،200 لوگوں کو سیلابی ریلے سے باہر نکالا گیا ہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ
Image caption دس سالوں کی مدت میں یہ سب سے شدید طوفان ہے

ہیوسٹن امریکہ کا چوتھا بڑا شہر ہے جہاں سیلاب کی صورت حال کے سبب تقریباً 70،000 لوگوں کے گھروں میں بجلی منقطح ہوگئی ہے۔

سیلاب کے پانی سے تقریبًا 1،000 گھر متاثر ہوئے ہیں جن میں پانی اندر تک پہنچ گیا ہے اور ابھی پانی کی سطح بڑھ رہی ہے۔

مقامی حکام نے ایک بڑے شوپنگ مال کو بےگھر ہونے والے متاثرہ لوگوں کے لیے محفوظ سینٹر بنا دیا ہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ
Image caption منگل تک بارشوں کی شدت میں کمی دیکھنا کا امکان ہے

اطلاعات کے مطابق ہلاک ہونے والے ایک شخص کی لاش پانی میں ڈوبی ہوئی گاڑی سے برآمد ہوئی ہے۔

حکام نے شہریوں کو خبردار کیا ہے کہ وہ تیز بہتے پانی میں گاڑی نہ چلائیں اور بچوں کو بھی پانی میں کھیلنے سے منع کیا گیا ہے جس میں سانپ اور دیگر موزی جانور ہوسکتے ہیں۔

سب سے زیادہ متاثر ہونے والے علاقوں میں گرین پوائنٹ کا مقام بھی ہے جہاں زیادہ تر غریب ہسپانوی نژاد لوگ آباد ہیں۔

تصویر کے کاپی رائٹ
Image caption اس سال ایک مقام پر پچھلی ریکرڈ سے 12 میٹر زیادہ پانی موجود تھا

ہیوسٹن شہر خیلج میکسکو کے پاس آباد ہونے کی وجہ سے یہاں تیز بارشوں کا سلسلہ ایک عام بات ہے۔ گذشتہ برس ہی شہر کئی بار شدید سیلاب کی ذد میں آیا تھا۔

دی سٹی آف ہیوسٹن کے ٹوئٹر اکاؤنٹ پر لکھا ہے کہ یہ سیلاب سنہ 2001 میں 'ٹروپکل سٹارم الیزن‘ کے بعد سے آنے والا اب تک کا سب سے بڑا سیلاب ہے۔

2001 کے سیلاب میں 23 لوگ ہلاک ہوئے تھے۔

حکام کا کہنا ہے کہ منگل تک بارشوں کی شدت میں کمی آنے کا امکان ہے۔

.

اسی بارے میں