مِتّل گھرانے کی دولت میں دو ارب پاؤنڈ کی کمی

تصویر کے کاپی رائٹ AP

گذشتہ سال کے مقابلے میں یورپ کے سب سے بڑے سٹیل بنانے والے کاروباری گھرانے کی دولت میں دو ارب پاؤنڈ کی کمی ہو گئی ہے۔

برطانوی اخبار ٹائمز کی امیر ترین افراد کی اس سال کی فہرست کے مطابق آرسلر مِتّل نامی کپمنی کے مالک لکشمی متل سنہ 2008 میں اس فہرست میں پہلے نمبر پر تھے اور وہ 27.7 ارب پاؤنڈ کے مالک تھے، لیکن اب ان کی دولت کم ہو کر 7.12 ارب پاؤنڈ ہو گئی ہے اور وہ فہرست میں 11 ہویں درجے پر چلے گئے ہیں۔

سنڈے ٹائمز کے مطابق جب سے معاشی بحران آیا ہے اس وقت سے لندن سے تعلق رکھنے والے ارب پتی افراد کی تعداد میں کمی ہوئی ہے۔ یہ تعداد سنہ 2015 میں 80 تھی جو اس سال 77 ہو گئی ہے۔

اس سال کی امیر ترین افراد کی فہرست میں پہلے ایک ہزار لوگوں میں 125 خواتین بھی شامل ہیں جو کہ ایک ریکارڈ تعداد ہے۔

سنہ 2016 کی فہرست میں برطانیہ اور آئرلینڈ میں سب سے زیادہ امیر افراد میں پراپرٹی کی دنیا کا بڑا کاروباری گھرانہ ’ریوبن برادرز‘ شامل ہے جو لندن کے مشہور مِلبینڈ ٹاور اور جان لوئس کی مرکزی عمارت کا مالک ہے۔ اس گھرانے کی دولت 13.1 ارب پاؤنڈ ہے۔

ڈیوڈ ریوبن اور ان کے بھائی سائمن ریوبن کی جائے پیدائش ممبئی ہے اور مِلبینڈ ٹاور اور جان لوئس کے علاوہ لندن کے نواح میں واقع آکسفرڈ ایئر پورٹ بھی ان کی ملکیت ہے۔ گذشتہ سال کے دوران اس گھرانے کی دولت میں 3.4 ارب پاؤنڈ کا اضافہ ہوا ہے۔

Image caption وین رُونی آٹھ کروڑ 20 لاکھ پاؤنڈ کے مالک ہیں اور وہ تیس سال سے کم عمر کے امیر ترین برطانوی کھلاڑی ہیں

برطانیہ میں امیر ترین افراد کی فہرست میں شامل ہونے کے لیے آپ کے پاس کم از کم دس کروڑ 30 لاکھ پاؤنڈ ہونا ضروری ہے۔

اس برس کی فہرست میں دیگر افراد میں ہِندوجا گروپ کے مالکان، سری ہندوجا اور گوپی ہندوجا، دوسرے درجے پر ہیں اور ان کی کل دولت 13 ارب پاؤنڈ ہے۔

فہرست میں تیسرے نمبر پر وارنر میوزک کے مالک ہیں جن کی دولت 11.9 ارب پاؤنڈ بتائی جاتی ہے۔

اس سے قبل جب مِتّل گھرانے کی دولت 27.7 ارب پاؤنڈ تھی تو وہ ٹائمز کی امیر ترین افراد کی فہرست میں ایک ریکارڈ تھا اور اس سے پہلے اور بعد میں اس فہرست میں کسی دوسرے خاندان کے پاس اتنی دولت دیکھنے میں نہیں آئی ہے۔

اسی بارے میں