شمالی کوریا میں 36 سال بعد کانگریس کا اجلاس

تصویر کے کاپی رائٹ AFP

شمالی کوریا کا کہنا ہے کہ اس کی حکمران پارٹی اگلے ماہ تقریباً 36 سال بعد پہلے مرتبہ اپنی اعلیٰ کانگریس کا اجلاس منعقد کرے گی۔ یہ اجلاس پیونگیونگ میں 6 مئی کو ہوگا۔

پارٹی کی تاریخ میں یہ ساتواں اجلاس ہے اور کِم جانگ اُن کی قیادت میں پہلا اجلاس ہو گا۔

اجلاس کے دوران شمالی کوریا کی پالیسیوں میں ممکنہ تبدیلیوں اور شمالی کوریا کے جوہری پروگرام کے حوالے سے بیانات جیسے اہم موضوعات کی وجہ سے اس تقریب پر کڑی نگاہ رکھی جائے گی۔

یہ خدشہ ظاہر کیا جا رہا کہ کوریا پانچویں جوہری تجربے کا ارادہ رکھتا ہے۔ شمالی کوریا اکثر اپنے متنازع جوہری تجربات اور اہم سیاسی تقریبات کا انعقاد ایک ساتھ کرتا ہے۔

جنوری میں چوتھے تجربے کے فوراً بعد سیٹلائٹ بھی لانچ کیا گیا۔ یہ دونوں تجربات موجودہ پابندیوں کی خلاف ورزی ہیں۔ ان تجربات کے بعد اقوام متحدہ نے شمالی کوریا پر مزید پابندیاں عائد کیں جن میں اس کے ساتھ روابط اور تجارت پر بھی پابندی عائد کی گئی۔

تصویر کے کاپی رائٹ
Image caption آخری کانگریس کا اجلاس اکتوبر سنہ 1980 میں ہوئی

شمالی کوریا کے موجودہ سربراہ کِم جونگ ان کی پیدائش سے پہلے منعقد ہونے والے کانگریس کا آخری اجلاس اکتوبر سنہ 1980 میں ہوا۔

وہ اجلاس چار دن جاری رہا اور اس دوران کم جونگ ال کو باقاعدہ طور پر سربراہ کم ال سنگ کے جانشین قرار دیا گیا تھا۔

بدھ کو شمالی کوریا کے ’کے سی این اے‘ خبر رساں ادارے کے بیان میں ساتواں اجلاس کے بارے میں کوئی تفصیل نہیں دی گئی اور نہ ہی یہ بتایا گیا کہ اس اجلاس کی کیا مدت ہو گی۔

توقع کی جا رہی ہے کہ کِم جونگ اُن اجلاس میں اپنی رہنمائی کو مزید مضبوط کریں گے اور معاشی نشوونما کے ایجنڈے اور جوہری پروگرام کی پیش رفت کے بارے میں بات کریں گے۔

تصویر کے کاپی رائٹ
Image caption پچھلے ہفتے شمالی کوریا نے یہ بھی دعویٰ کیا کہ انہوں نے آب دوز سے میزائل داغے’ کولڈ لانچ‘ کی ٹیکنولوجی کے زریعے کیا

جنوبی کوریا کے صدر پارک گوین ہائی نے منگل کو کہا کہ شمالی کوریا نے پانچویں جوہری تجربے کی تیاری مکمل کر لی ہے اور کسی بھی وقت تجربہ کر سکتے ہیں۔

پچھلے ہفتے شمالی کوریا نے یہ بھی دعویٰ کیا کہ انھوں نے آب دوز سے میزائل داغے جو کہ’ کولڈ لانچ‘ کی ٹیکنولوجی کے ذریعے کیا جبکہ جنوبی کوریا کے اہلکاروں کا کہنا ہے کہ شمالی کوریا درمیانے درجے کا ’موساڈان بیلسٹک میزائل‘ کے تجربے کرنے کی تیاری میں بھی مصروف ہے۔

اسی بارے میں