نوگورنو قرہ باغ کو آزاد ریاست تسلیم کرنے کا آرمینی بل منظور

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption نوگورنو قرہ باغ میں آذربائیجان اور آرمینیا کے درمیان کئی عشروں کی بدترین جھڑپوں میں درجنوں افراد مارے جا چکے ہیں

آرمینیا کی حکومت نے ایک بل منظور کیا ہے جس میں کوہِ قاف میں واقع متنازع علاقے نوگورنو قرہ باغ کو آزاد ریاست کے طور تسلیم کیا گیا ہے۔

آرمینیا کی جانب سے یہ قدم اس وقت اٹھایا گیا ہے جب ایک ماہ قبل ہی نوگورنو قرہ باغ میں آذربائیجان اور آرمینیا کے فوجیوں کے درمیان جھڑپیں ہوئی تھیں۔

یہ بل پارلیمنٹ کی جانب سے بھی منظور ہونا لازمی ہے، تاہم نامہ نگاروں کا کہنا ہے کہ اسے آسانی سے منظوری مل جائے گی۔

اس بل کی منظوری پر آذربائیجان کی جانب سے کوئی ردعمل سامنے نہیں آیا۔

نوگورنو قرہ باغ میں آذربائیجان اور آرمینیا کے درمیان کئی عشروں کی بدترین جھڑپوں میں درجنوں افراد مارے جا چکے ہیں۔

نوگورنو قرہ باغ 1994 میں جنگ کے خاتمے کے بعد سے آرمینی علیحدگی پسندوں کے قبضے میں ہے۔

آرمینیا اور آذربائیجان کے درمیان سنہ 1980 کی دہائی کے آخر میں لڑائی شروع ہوئی تھی جو سنہ 1991 میں کھلی جنگ کی شکل اختیار کر گئی۔

سنہ 1994 میں ہونے والی جنگ بندی سے پہلے اس لڑائی میں ایک اندازے کے مطابق 30 ہزار افراد ہلاک ہوئے تھے۔

یہ خطہ آذربائیجان کی حدود کے اندر ہے تاہم اس پر آرمینی نسل کے لوگوں کا کنٹرول ہے۔

اسی بارے میں