اسرائیلی ٹینک کا گولہ لگنے سے فلسطینی خاتون ہلاک

تصویر کے کاپی رائٹ AFP

فلسطینی حکام کا کہنا ہے کہ غزہ کی پٹی میں اسرائیلی ٹینک کا گولہ لگنے سے ایک فلسطینی خاتون ہلاک ہو گئی ہیں۔

مقامی طبی حکام کے مطابق غزہ کے جنوب میں خان یونس کے علاقے میں اسرائیلی ٹینک کی فائرنگ سے ایک خاتون ہلاک جبکہ ایک دوسرا شخص زخمی ہو گیا۔

دوسری جانب اسرائیل کا کہنا ہے کہ وہ حماس کے جنگجوؤں کی جانب سے مارٹر گولے داغے جانے پر جوابی کارروائی کر رہا تھا۔

٭ اسرائیل نے غزہ سے آنے والی ’نئی‘ سرنگ ڈھونڈ لی

٭ غزہ کی سرنگوں میں نئی جنگ کی تیاریاں

٭ غزہ: حماس کی سرنگوں کا نیٹ ورک

واضح رہے کہ یہ تازہ جھڑپیں ایک ایسے وقت ہوئی ہیں جب اسرائیل کا کہنا ہے کہ اس نے غزہ سے اسرائیل آنے والی ایک نئی سرنگ دریافت کی ہے۔

اسرائیلی فوج کے ترجمان لیفٹیننٹ کرنل پیٹر لرنر کا کہنا ہے کہ نئی دریافت ہونے والی سرنگ زمین سے 30 میٹر نیچے ہے۔

اسرائیل کے وزیرِ دفاع نے ایک بیان میں کہا ہے ’ ہم حماس کی دھمکیوں سے خوفزدہ نہیں ہوں گے، ہم اپنی خودمختاری کی خلاف ورزی کرنے والوں کے خلاف اس وقت تک کارروائی کریں گے جب تک ہم آخری سرنگ تلاش کر کے اسے بے بقاب نہ کر دیں۔‘

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters

اسرائیلی فوج کا کہنا ہے کہ شدت پسند سرحدی علاقوں میں واقع ان سرنگوں کو تلاش کرنے کے دوران اسرائیلی افواج کو نشانہ بناتے ہیں۔

ادھر حماس کے شدت پسندوں نے متنبہ کیا ہے کہ ’ہم غزہ کی پٹی میں صيہونيت جارحیت کی اجازت نہیں دیں گے۔‘

واضح رہے کہ اسرائیل کی فوج نے گذشتہ ماہ کہا تھا کہ اس نے ایک سرنگ دریافت کی ہے جو غزہ کی پٹی سے کئی میٹر اسرائیلی علاقوں میں جاتی تھی۔

سنہ 2014 میں اسرائیلی فوجیوں اور جنگجوؤں کے درمیان غزہ میں ہونے والی تباہ کن جنگ کے بعد اس طرح کی پہلی سرنگ ملی ہے۔

50 دنوں کی جنگ میں حماس کے جنگجوؤں نے چار مرتبہ سرنگیں استعمال کر کے اسرائیلی علاقوں میں حملے کر کے 12 فوجیوں کو ہلاک کیا تھا جبکہ اسرائیلی فوجیوں نے 30 سے زیادہ سرنگیں تباہ کی تھیں۔

اقوامِ متحدہ کے مطابق اس لڑائی میں 2,251 فلسطینی ہلاک ہوئے تھے جن میں سے 1,462 عام شہری تھے، جبکہ 11,231 افراد زخمی ہوئے تھے۔ غزہ میں کل 18,000 مکانات بھی تباہ ہوئے تھے یا انھیں بہت نقصان پہنچا تھا۔

اسرائیل میں 67 فوجی اور چھ عام شہری ہلاک ہوئے تھے جبکہ 1,600 زخمی ہوئے تھے۔

غزہ سے داغے گئے راکٹوں نے اسرائیل میں کئی عمارتوں کو نقصان پہنچایا تھا۔

اسی بارے میں