کٹوتیوں کا ’شیطانی چکر‘ ختم ہونا چاہیے: تسیپراس

الیکسس تسیپراس تصویر کے کاپی رائٹ Getty
Image caption یونان کے وزیرِ اعظم الیکسس تسیپراس نے پینشن اور ٹیکس کے نظام میں کی جانے والی متنازع اصلاحات کا دفاع کیا ہے۔

یونان کے وزیرِاعظم الیکسس تسیپراس نے کہا ہے کہ وقت آ گیا ہے کہ کٹوتیوں کے ’شیطانی چکر‘ کو ختم کیا جائے اور یورو زون کے ساتھ قرض میں سہولت کے متعلق مذاکرات شروع کیے جائیں۔

اس سے قبل یونان کی پارلیمان نے پیر کو یورو زون کے وزرائے خزانہ کے اہم اجلاس سے قبل ٹیکس اور پینشن کے بارے میں متنازع اصلاحاتی پیکج کی منظوری دے دی ہے۔ یونان کو ملنے والی عالمی امداد اصلاحات پر عمل درآمد سے مشروط ہے۔

یونان کے وزیرِ اعظم نے پینشن اور ٹیکس کے نظام میں کی جانے والی متنازع اصلاحات کا دفاع کیا ہے۔ یونان کو ملنے والی عالمی امداد اصلاحات پر عمل درآمد سے مشروط ہے۔

لیکن یہ اصلاحات یونان میں ٹریڈ یونینز اور بچت کے لیے کی جانے والی اصلاحات کے خلاف مہم چلانے والوں میں بہت غیر مقبول ہیں۔ ایتھنز میں ہر روز مظاہرے ہوتے رہتے ہیں۔

تصویر کے کاپی رائٹ AP
Image caption یونان میں ٹریڈ یونینز اور بچت کے لیے کی جانے والی اصلاحات کے خلاف مہم چلانے والے مظاہرے کرتے رہتے ہیں

یونانی پارلیمنٹ کے باہر ویسے تو زیادہ تر مظاہرے پرامن ہوئے ہیں لیکن کبھی کبھی یہ پرتشدد بھی ہو جاتے ہیں۔

یونان کی ٹریڈ یونین موومنٹ حکومتی اصلاحات کے خلاف ڈٹی ہوئی ہے۔

یونین کے ایک رکن کہتے ہیں کہ ’ہم سمجھوتہ نہیں کریں گے، ہم جھکیں گے نہیں۔ ہم اِن کی پالیسیوں کو بدل دیں گے اور جو اِن پر عمل کرنے کی کوشش کرے گا ہم اُس کا تختہ الٹ دیں گے۔ ‘

پارلیمنٹ میں اصلاحات پر دو روز تک بحث ہوئی۔ اگر اِن اصلاحات پر عمل نہیں کیا جاتا تو چھ ارب ڈالر کی امداد بھی نہیں ملے گی۔

وزیرِ اعظم الیکسس تسیپراس نے اپنی حکومت کا دفاع کرتے ہوئے کہا ہے کہ اصلاحات میں غریبوں کا خیال رکھا گیا ہے اور یہ اصلاحات پینشن کا نظام تباہ ہونے سے بچا لیں گی۔

اِن اصلاحات کو معمولی اکثریت سے پارلیمنٹ سے منظور کروا لیا گیا ہے۔ احتجاج کرنے والے تو اِس سے یقینًا خوش نہیں ہونگے۔ لیکن پیر کو یورو زون کے وزراء کے اجلاس کے شرکا اطمینان کا سانس لیں گے۔

انھیں امید ہے کہ اِس سے فی الحال ایک نئے بحران کو روکنے میں مدد ملے گی۔

اسی بارے میں