بی بی سی کھانے کی تراکیب کی ویب سائٹ بند کرے گی

بی بی سی نے اعلان کیا ہے کہ 15 ملین پاؤنڈ کی بچت کرنے کے لیے کھانے کی تراکیب کی ویب سائٹ اور نیوز بیٹ کو بند کر دیا جائے گا۔ بی بی سی کی ٹریول ویب سائٹ میں بھی کمی کی جائے گی۔

بی بی سی کی کھانے کی ویب سائٹ پر 11,000 سے زائد کھانے کی تراکیب موجود ہیں۔

ذرائع کے مطابق ویب سائٹ پر پہلے سے موجود کھانے کی ترکیبوں کو آرکائیو کرنےکا امکان ہے جبکہ کچھ ترکیبوں کو بی بی سی کمرشل گڈ فوڈ پر منتقل کیا جا سکتا ہے جس کے بارے میں ابھی فیصلہ کیا جانا ہے۔

٭ بی بی سی ’مخصوص مواد‘ کی تیاری پر توجہ مرکوز رکھے

٭ ’بی بی سی کی سیاسی خودمختاری ختم ہو رہی ہے‘

٭ مفت لائسنسوں کی فیس بی بی سی ادا کرے: برطانوی چانسلر

ٹی پر دکھائی جانے والی کھانے کی ترکیبوں کو آن لائن پوسٹ کیا جائے گا تاہم وہ صرف 30 دن کے لیے مہیا ہوں گی۔

خیال رہے کہ برطانوی حکومت نے بی بی سی میں ’بڑے پیمانے پر تبدیلیوں‘ کا منصوبہ بنایا ہے، جسے ایک وائٹ پیپر کی شکل میں پیش کیا گیا ہے اور یہ تجاویزگذشتہ ہفتے بی بی سی کے مستقبل پر حکومت کے وائٹ پیپر کی اشاعت کے بعد سامنے آئی ہیں۔

نئی تبدیلیوں کا اعلان بی بی سی کے ڈائریکٹر آف نیوز اینڈ کرنٹ افیئرز جیمز ہارڈنگ نے کیا۔

انھوں نے کہا کہ ’انٹرنیٹ کی وجہ سے بی بی سی کو اپنے آپ میں تبدیلیاں لانا پڑی ہیں لیکن اس کا مشن نہیں بدلا۔‘

’ہم وہ چیزیں کرنا بند کر دیں گے جہاں ہم اپنا کام دہرا رہے ہیں، مثلاً کھانے کے پروگرام، اور ایسی سروسز کو کم کر دیں گے جن ٹریول بھی شامل ہے، کیونکہ مارکیٹ میں اس کے لیے بڑی اور بہترین سروسز موجود ہیں۔‘

شیف ڈین لیپارڈ کا، جن کی کھانے کی تراکیب بی بی سی فوڈ پر آتی تھیں، کہنا ہے کہ ویب سائٹ پر ’عالمی معیار کی غیر معمولی آرکائیو تھیں‘ انھوں نے پوچھا کہ ایسی لائبریری کہاں تھی جہاں ہم اپنے حقوق کو محفوظ رکھ سکیں؟

انھوں نے بی بی سی ریڈیو فور ٹو ڈے کو بتایا ’آپ جانتے ہیں کہ بی بی سی کی تراکیب آپ کے کام آتی تھیں۔ میں آپ کو بتا سکتا ہوں کہ ویب سائٹ پر ہزاروں تراکیب تھیں۔‘

بی بی سی کے مطابق یہ کہنا ٹھیک نہیں ہے کہ کھانے کی تراکیب ’ہٹا‘ دی جائیں گی تاہم ’بی بی سی کی فوڈ سائٹ بند کر دی جائے گی اور اس بات کا امکان ہے کہ کھانے کی زیادہ تر تراکیب کو آرکائیو کر دیا جائے گا۔

اس سے قبل برطانیہ کے سیکریٹری برائے ثقافت جان وٹنگڈیل نے برطانوی دارالعوام میں بی بی سی میں تبدیلیوں کے منصوبے کے بارے میں تفصیلات فراہم کرتے ہوئے کہا تھا کہ بی بی سی کو اپنی توجہ ’مخصوص مواد‘ کی تیاری پر مرکوز رکھنی چاہیے جو اسے ممتاز کرتا ہے۔

انھوں نے اعلان کیا تھا کہ بی بی سی کو حاصل ہونے والی ٹی وی لائسنس فیس کم از کم 11 سال تک جاری رہے گی جبکہ ناظرین کو بی بی سی آئی پلیئر کے استعمال کے لیے رقم دینا ہوگی۔

جان وٹنگڈیل نے بی بی سی سے بھاری تنخواہیں پانے والے افراد کی تنخواہیں منظرِ عام پر لانے کا بھی اعلان کیا تھا۔

اسی بارے میں