بحیرہ جنوبی چین پر امریکی جاسوس طیارہ ’انٹرسیپٹ‘

تصویر کے کاپی رائٹ Xinhua

امریکی وزارت دفاع کے مطابق دو چینی جیٹ طیاروں نے بحیرۂ جنوبی چین میں ایک امریکی فوجی طیارے کو ’خطرناک طریقے سے انٹرسیپٹ‘ کیا ہے۔

پینٹاگون کے مطابق یہ واقعہ 17 مئی کو بین الاقوامی فضائی حدود میں اس وقت پیش آیا جب امریکی فوج کا جاسوس طیارہ معمول کی پرواز پر تھا۔

چین کی جانب سے بحیرۂ جنوبی چین میں مصنوعی جزیروں کی تعمیر پر امریکہ سمیت دیگر ممالک پریشان ہیں۔

واشنگٹن کا خیال ہے کہ چین متنازع ملکیت والے علاقوں میں اپنا اثر و رسوخ بڑھانے کے لیے عسکری طاقت میں اضافہ کر رہا ہے جبکہ چین کا کہنا ہے کہ قومی سلامتی کے استحکام کے لیے اُس کے اقدامات جائز ہیں۔

امریکی فوجی ذرائع نے امریکی خبر رساں ایجنسی اے پی کو بتایا کہ جیٹ طیاروں کے ساتھ ٹکر سے بچنے کے لیے جاسوس طیارے کے پائلٹ کو جہاز 200 فٹ نیچے لانا پڑا۔

امریکی محکمہ دفاع کا کہنا ہے کہ وہ اس واقعے کو فوجی اور سفارتی سطح پر اٹھا رہے ہیں۔

محکمہ دفاع کی جانب سے بیان میں کہا گیا ہے کہ ایک سال سے چین کے پائلٹ محفوظ اور پیشہ وارانہ طریقے سے جہاز اڑا رہے ہیں۔

اسی بارے میں