یورو چیمپیئن شپ کے دوران دہشت گردی کا خطرہ: امریکہ

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters
Image caption فراسن بھر میں 90000 پولیس اہلکار، فوج اور نجی سکیورٹی ایجنٹس تعینات ہیں

امریکہ نے خبردار کیا ہے کہ فرانس میں اگلے ماہ منعقد ہونے والے یورو 2016 فٹ بال چیمپیئن شپ کو شدت پسندوں کی جانب سے نشانہ بنائے جانے کا خطرہ ہے۔

امریکی سٹیٹ ڈیپارٹمنٹ کے مطابق گرمیوں میں بڑے پیمانے پر سیاح یورپ کا رخ کرتے ہیں اور یہ دہشت گردوں کا بڑا ہدف ہو سکتے ہیں۔

* دہشت گردی کے جوہری حملے کا خطرہ حقیقی ہے :اوباما

* یورپ میں حملوں پر غم وغصہ زیادہ؟

* دہشت گرد حملوں سے بچنے کے پانچ طریقے

فٹ بال ٹورنامنٹ دس جون سے دس جولائی تک مختلف مقامات پر جاری رہے گا۔

فرانس میں گذشتہ برس کے پیرس حملوں کے بعد سے ہنگامی حالت نافذ ہے۔

سٹیڈیم، کنسرٹ ہال اور ریستورانوں پر ہونے والے ان حملوں میں 130 افراد ہلاک اور متعدد زخمی ہوئے تھے۔ اس کے بعد مارچ میں ہمسایہ ملک بیلجیئم کے برسلز ایئر پورٹ اور میٹرو سٹیشن پر حملوں میں 32 لوگ مارے گئے۔ دونوں حملوں کی ذمہ داری نام نہاد دولتِ اسلامیہ نے قبول کی تھی۔

امکان ہے کہ یورو فٹ بال ٹورنامنٹ دیکھنے کے لیے دس لاکھ سے زائد شائقین فرانس آئیں گے۔ ٹورنامنٹ میں براعظم کی بہترین قومی ٹیمیں حصہ لیں گی۔

تصویر کے کاپی رائٹ Getty
Image caption امکان ہے کہ یورو فٹ بال ٹورنامنٹ کے لیے دس لاکھ سے زائد شائقین فرانس آئیں گے

امریکہ نے اپنے شہریوں کو سفری تنبیہ جاری کرنے ہوئے کہا کہ ان پر یورپ بھر میں حملوں کا خطرہ ہے۔

یوں تو امریکہ اپنے شہریوں کے لیے معمول کے مطابق سفری تنبیہہ جاری کرتا رہتا ہے کہ لیکن 20 برسوں میں پہلی بار ہے کہ اس نے بالخصوص یورپ کے لیے الرٹ جاری کیا ہے۔

تنبیہہ کے مطابق سیاحتی مقامات، ریستورانوں، کمرشل سنٹرز اور ٹرانسپورٹیشن کو حملوں کا نشانہ بنایا جا سکتا ہے۔

اس تنبیہہ میں ٹور ڈی سائیکل ریس اور پولینڈ میں کیتھولک چرچز کے یوتھ ڈے کے حوالے سے بھی خبردار کیا گیا ہے جہاں 25 لاکھ شائقین کی آمد متوقع ہے۔

ایک اہلکار نے خبر رساں ادارے روئٹرز کو بتایا کہ اس تنبیہہ کے لیے کوئی مخصوص خطرہ نہیں بتایا گیا۔

برطانیہ کی وزراتِ خارجہ نے بھی فرانس میں دہشت گردی کے حوالے سے خبردار کیا ہے۔

امریکی تنبیہہ کے حوالے سے پوچھنے پر وزراتِ خارجہ کا کہنا تھا وہ بالخصوص فٹ بال کے شائقین کو خبردار کریں گے۔

فرانس نے ہنگامی حالت میں توسیع کرتے ہوئے اس میں ٹورنامنٹ کا وقت بھی شامل کیا ہے اور وہ اس دوران ڈرونز پر پابندی کے حوالے سے غور کر رہا ہے۔

فراسن بھر میں 90000 پولیس اہلکار، فوج اور نجی سکیورٹی ایجنٹس تعینات ہیں۔

اسی بارے میں