شمالی کوریا کا بیلسٹک میزائل تجربہ ’ناکام‘

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters
Image caption شمالی کوریا پر اقوامِ متحدہ نے سنہ 2006 میں بیلسٹک میزائل کے استعمال کی پابندی عائد کی تھی

جنوبی کوریا کے عسکری حکام کا کہنا ہے کہ شمالی کوریا کی جانب سے اس کے مشرقی ساحل پر بیلسٹک میزائل تجربے کی کوشش کی گئی اور بظاہر یہ تجربہ ناکام ہوگیا۔

تاحال یہ واضح نہیں ہے کہ یہ کس قسم کا میزائل تھا تاہم اس سے قبل اپریل میں درمیانے فاصلے تک مار کرنے والے ’مسندن‘ میزائل کے تین تجربے ناکام ہوچکے ہیں۔

خیال رہے کہ شمالی کوریا پر اقوامِ متحدہ نے سنہ 2006 میں جوہری تجربہ کرنے اور بیلسٹک میزائل کے استعمال کی پابندی عائد کی تھی۔

شمالی کوریا کی جانب سے جنوری میں چوتھے جوہری تجربے اور متعدد میزائل تجربات کے بعد خطے میں کشیدگی پائی جاتی ہے۔

جنوبی کوریا کے جوائنٹ چیفس آف سٹاف کا کہنا تھا کہ مقامی وقت کے مطابق پانچ بج کر 20 منٹ پر شمالی کوریا کے مشرقی ساحل پر تجربے کی کوشش کی گئی تاہم اس حوالے سے مزید تفصیلات سے آگاہ نہیں کیا گیا۔

جنوبی کوریا کے خبررساں ادارے یونہاپ کے مطابق چوتھا ناکام ہونے والا تجربہ بھی مسندن میزائل کا تھا۔

یاد رہے کہ شمالی کوریا پر حال ہی میں امریکہ نے مزید نئی پابندیاں عائد کی تھیں۔

یکم اپریل کو امریکی صدر باراک اوباما نے اعلان کیا تھا کہ امریکہ اور چین نے فیصلہ کیا ہے کہ شمالی کوریا کو مستقبل میں میزائل ٹیسٹ کرنے سے روکیں گے۔

اس کے باوجود شمالی کوریا نے مغربی ممالک کو دھمکیاں دیتے ہوئے ہائیڈروجن بم اور پھر طویل فاصلے تک جانے والے میزائل کے تجربات کیے۔

ماضی میں شمالی کوریا پر سنہ 2006، سنہ 2009 اور پھر سنہ 2013 میں جوہری تجربات کی وجہ سے اقوام متحدہ کی جانب سے عائد کی گئی پابندیوں سے شمالی کوریا کے ایٹمی ارادوں پر کوئی اثر نہیں ہوا۔

پابندیوں پر عمل درآمد کی زیادہ تر ذمہ داری اب چین پر پڑ رہی ہے۔

اسی بارے میں