’اٹلی کے حوالے کیا جانے والا شخص اصل ملزم نہیں‘

تصویر کے کاپی رائٹ NCAPolizia di Stato
Image caption اس شخص کے دوست نے بی بی سی کو بتایا کہ ان کے دوست کی شناخت غلط کی گئی ہے اور وہ بے گناہ ہیں

انسانی سمگلنگ کے الزام میں اٹلی کے حوالے کیے گئے ایک شخص کے دوست کے مطابق یہ وہ شخص نہیں جو پولیس کو مطلوب تھا۔

اطالوی استغاثہ کے خیال میں جنرل کے نام سے مشہور مرید میدہنی افریقہ سے یورپ پناہ گزینوں کو سمگل کرنے کے آپریشن میں مرکزی کردار ادا کر رہے ہیں۔

حکام کا کہنا کہ ایریٹریا سے تعلق رکھنے والے مرید نامی شخص کو گذشتہ ماہ مئی میں سوڈان کے دارالحکومت خرطوم سے گرفتار کرنے کے بعد منگل کو روم پہنچا دیا گیا ہے۔

تاہم اس شخص کے دوست نے بی بی سی کو بتایا کہ ان کے دوست کی شناخت غلط کی گئی ہے اور وہ بے گناہ ہیں۔

اس آپریشن میں شام برطانیہ کی نیشنل کرائم ایجنسی کے ترجمان نے خبر رساں ادارے اے پی کو بتایا: ’یہ ایک پیچیدہ متعدد شراکت داروں کا آپریشن تھا اور جلد ہی ان کے دعوے گردش کرنے لگ جائیں گے۔‘

اطالوی پولیس کے ایک عہدیدار نے بی بی سی کو بتایا ہے کہ وہ مشتبہ شخص کی شناخت کے حوالے سے کی جانے والی تحقیقات کے بارے میں نہیں جانتے تھے۔

بی بی سی کو معلوم ہوا ہے کہ اطالوی پولیس اب بھی یہی سمجھ رہی ہے کہ ان کے پاس صحیح شخص ہے۔

این سی اے کا کہنا ہے کہ انھوں نے خرطوم میں اس شخص کا پتہ لگایا جہاں سے انھیں گرفتار کیا گیا۔

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption ایریٹریا سے تعلق رکھنے والے شخص مرید کو مئی میں گرفتار کرنے کے بعد منگل کو روم پہنچا دیا گیا ہے

اس شخص کے روم پہنچنے کے بعد اطالوی پولیس نے بدھ کو ان کی تصاویر جاری کیں۔

ہرمن بیرھ نامی شخص نے بی بی سی کو بتایا کہ وہ ایتھوپیا میں رہتے ہیں اور ایریٹریا میں اس شخص کے ساتھ جس کی تصاویر جاری کی گئی ہیں پلے بڑھے۔

ان کا کہنا تھا کہ ’مجھے نہیں لگتا کہ اس شخص میں اتنی ہمت ہے کہ وہ کسی بھی ایسے کام میں ملوث ہو۔ وہ بہت پیار، دوستی کرنے والا مہربان انسان ہے۔‘

ایریٹریا سے ہی تعلق رکھنے والے ایک اور شخص نے بتایا کہ وہ حال ہی میں اس گرفتار ہونے والے شخص کے ساتھ ایک ہی گھر میں رہتے تھے۔

اٹلی کی خبر رساں ایجنسی آنسا کا کہنا ہے کہ ’مرید پر وسطی افریقہ اور لیبیا کے درمیان کام کرنے والے جرائم پیشہ گروہوں میں سے ایک کا سربراہ اور آرگنائزر ہونے کا الزام ہے۔‘

اسی بارے میں