شادیوں میں غیر متوقع لمحات یادگار بن جاتے ہیں

تصویر کے کاپی رائٹ Christina TorinoBenton

شادیوں میں کبھی غیر متوقع لمحات زندگی کے سب سے یادگار لمحات بن جاتے ہیں۔

کینیڈا کی ایک خاتون کے لیے شادی کا یادگار لمحہ اس وقت بنا جب انھوں نے اپنی ہی شادی میں تھوڑا وقت نکال کر اپنی نو ماہ کی بیٹی کو دودھ پلایا۔

30 سالہ کرسٹینا ٹورینو بینٹن نے کہا کہ صبح سے شادی کی مصروفیات اور گرمی کے باعث میری بیٹی شادی کے دوران رونے لگ گئی۔ مونٹریال کی رہائشی کرسٹینا کا کہنا ہے کہ انھوں نے فوراً اپنی بیٹی کو گود میں لیا اور دودھ پلانا شروع کر دیا۔ جس وقت وہ بیٹی کو دودھ پلا رہی تھیں اس وقت پادری شادی کی رسوامات کروا رہے تھے۔ یہ وہ موقع تھا جب فوٹوگرافر نے کرسٹینا کی تصویر کھینچی۔

انھوں نے کہا ’میرے ذہن میں یہ بات آئی ہی نہیں کہ میں ایسا نہ کروں۔ صاف بات یہ ہے کہ اس کے علاوہ کوئی چارہ نہیں تھا۔‘

کرسٹینا نے اپنی بیٹی کو دودھ پلانے کی تصویر کو فیس بک پر بریسٹ فیڈنگ گروپ کے ساتھ شیئر کرنے کا فیصلہ کیا۔ اس تصویر کو 7900 لائکس ملے۔

اس تصویر کا کیپشن لکھا گیا ’کہیں بھی اور کبھی بھی دودھ پلانا۔ وہ لمحہ جب آپ کی شادی ہو رہی ہو اور آپ کے بچے کو بھوک لگ جائے۔ مجھے اپنے آپ پر فخر ہے۔‘

اس تصویر پر کئی ماؤں نے عروسی جوڑوں میں دودھ پلاتے ہوئے اپنی تصاویر بھی شیئر کیں۔

فیس بک پیج پر ایک ماں نے اپنے بچے کو اپنا دودھ پلاتے ہوئے اپنی تصویر پوسٹ کر کے لکھا ’شادی سے دس منٹ قبل۔‘ کرسٹینا کا کہنا ہے کہ وہ اپنی تصویر پر آنے والے تبصروں پر بہت خوش ہیں لیکن چند تبصروں نے ان کی دل آزاری بھی کی ہے۔

چند لوگوں نے کرسٹینا کو چرچ میں اپنی بچی کو دودھ پلانے پر تنقید کا نشانہ بنایا ہے۔

کرسٹینا نے لکھا ’ان افراد کو میں کہتی ہوں کہ اپنے بچے کو اپنا دودھ پلانے سے زیادہ قدرتی چیز کوئی نہیں ہو سکتی۔‘

اسی بارے میں