’نوح کی کشتی‘ تھیم پارک میں

Image caption طوفان نوح سے متعلق بائیبل کی روایات پر مبنی کہانی یہ ہے کہ ایک شخص کو خدا نے عذاب الہی یا بڑے سیلاب سے متعلق متنبہہ کیا تھا

امریکی ریاست کینٹکی کے ایک تھیم پارک میں پیغمبر نوح کی معروف کشتی کی شکل کی ہی ایک بہت بڑی لکڑی کی کشتی تیار کر کے نمائش کے لیے پیش کی گئی ہے۔

یہ کشتی تقریباً 510 فٹ لمبی، 85 فٹ چوڑی اور 51 فٹ اونچی ہے۔

اسے ان عیسائیوں نے بنوایا ہے جن کا عقیدہ ہے کہ طوفان نوح کی معروف کہانی ایک تاریخی واقعہ ہے۔

’انسرز ان جینسز‘ نامی جس وزارت نے اسے بنوایا ہے اس کا کہنا ہے کہ پارک میں بطور نقل جو کشتی پیش کی گئی ہے اس کی لمبائی چوڑائی بائبل میں درج تفصیلات کے مطابق ہے۔

اس کشتی میں بعض جانوروں اور ان مویشیوں کی بھی نقل پیش کی گئی جن کے متعلق یہ مانا جاتا ہے کہ وہ بھی نوح کی کشتی میں سوار کیےگئے تھے۔ اس کشتی میں نوح کی فیملی کو بھی اسی انداز میں دکھایا گیا ہے جس طرح گروپ کا عقیدہ ہے۔

اس گروپ کا ماننا ہے کہ 6 ہزار برس قبل خدا نے ڈائنوسارز سمیت دنیا کی مختلف چیزوں کی تخلیق کی تھی۔ جبکہ اس کے برعکس سائنسدانوں کا کہنا ہے کہ انسانوں کی آمد سے قبل ہی ڈائنوسارز دنیا سے تقریباً ساڑھے چھ کروڑ برس قبل ہی معدوم ہوچکے تھے۔

اس کشتی کی تعمیر پر تقریباً سو ملین ڈالر کا خرچ آیا ہے۔

لیکن سائنٹیفک سوچ رکھنے والے بہت سے لوگوں نے اس طرح کی نمائش پر نکتہ چینی کی ہے اور کہا ہے چونکہ یہ فکر سائنسی نظریات کے مخالف ہے اس لیے اس طرح کے پراجیکٹ کے لیے ٹیکس کی رعاتیں نہیں ملنی چاہیے تھیں۔

مخالفین نے خبر رساں ادارے اے پی سے بات چیت میں کہا کہ کلیسا اور حکومت کے درمیان جو فاصلہ ہونا چاہیے یہ اس کی صریحاً خلاف ورزی ہے۔

اس تھیم پارک سے تھوڑے سے ہی فاصلے پر رہنے والے جم ہلٹن نے کہا: ’بنیادی طور پر یہ کشتی چرچ ہے جو سائنسی طریقے سے غیر تعلیم یافتہ بچوں کی پرورش کرتی ہے اور سائنس کے بارے میں ہی ان سے جھوٹ بولتی ہے۔‘

جس وزارت نے اسے تعمیر کروایا ہے اس کا کہنا ہے کہ پہلے سال میں ہی تقریبا بیس لاکھ لوگ اس پارک کا دورہ کریں گے۔ اس کا افتتاح جمعرات کو ہی کیا گیا ہے۔

اسی بارے میں