روس ہلیری کلنٹن کی ای میلز تلاش کرے: ڈونلڈ ٹرمپ

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters
Image caption ڈونلڈ ٹرمپ کا کہنا ہے کہ ان ای میلوں میں ممکنہ طور پر بعض ’خوبصورت چیزیں ہوں گی‘

رپبلکن پارٹی کے صدارتی امیدوار ڈونلڈ ٹرمپ نے روس سے کہا ہے کہ وہ ان کی حریف ہلیری کلنٹن کی ہیک ہونے والی ای میلوں کو تلاش کریں۔

ڈونلڈ ٹرمپ کا کہنا ہے کہ ان ای میلوں میں ممکنہ طور پر بعض ’خوبصورت چیزیں ہوں گی۔‘

گذشتہ ہفتے وکی لیکس نے ڈیموکریٹک نیشنل کمیٹی کی ہیک ہونے والے ای میلز جاری کی تھیں۔

٭ مشیل اوباما کی ٹرمپ کے ’نفرت آمیز رویے‘ کی مذمت

٭ ہیلری نے امریکہ کو خطرے میں ڈالا: ٹرمپ

کہا جا رہا ہے کہ ان میں سے کوئی 30 ہزار کے قریب ای میلز جاری نہیں کی گئیں ہیں۔ ایک غیر معمولی درخواست میں ڈونلڈ ٹرمپ نے عالمی طاقتوں سے ان ای میلوں کو تلاش کرنے کا کہا ہے۔

ڈونلڈ ٹرمپ کا کہنا ہے کہ ’روس، اگر آپ سن رہے ہو، مجھے امید ہے کہ آپ ان 30 ہزار ای میلز کو تلاش کر لو گے جو کہ غائب ہیں۔‘

ان کا مزید کہنا ہے تھا کہ ’میرے خیال میں آپ کو ہماری پریس کی جانب سے بڑا انعام دیا جائے گا۔‘

ہلیری کلنٹن کی مہم کے مینجر راب موک کا کہنا ہے کہ روس نے یہ ای میلیں ہیک کی ہیں تاکہ ڈیموکریٹس کو کمزور کرے اور ٹرمپ کی مدد کرے۔

دوسری جانب بدھ کے روز این بی سی نیوز کے ساتھ ایک انٹرویو میں امریکی صدر باراک اوباما نے جن کی حکومت پر بھی ہیک کرنے کا الزام ہے نے روس کو اس کا ذمہ دار ٹھہرانے کے امکان کو مسترد کرنے سے انکار کیا ہے۔

باراک اوباما کا کہنا تھا کہ ’ہم یہ جانتے ہیں کہ روسی ہمارے کمپیوٹرز کو ہیک کرتے ہیں، نہ صرف سرکاری کمپیوٹرز بلکہ نجی کمپیوٹرز بھی۔‘

روس کے ترجمان دمیتری پیسکوو نے بدھ کو کہا کہ ’صدر پوتن کئی بار کہہ چکے ہیں کہ روس کبھی بھی دوسرے ممالک کے داخلی امور میں مداخلت نہ کرے گا اور نہ کرتا ہے، خاص طور پر انتخابی عمل کے دوران۔‘

اسی بارے میں