صدارتی انتخاب حساب بےباق کرنے کا وقت ہوگا: ہلیری کلنٹن

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters
Image caption امریکہ میں کسی بھی بڑی سیاسی جماعت کی طرف سے ہلیری کلنٹن پہلی خاتون صدارتی امیدوار ہیں

ڈیموکریٹک پارٹی کی جانب سے بطور صدارتی امیدوار نامزدگی قبول کرنے کے بعد ہلیری کلنٹن نے کہا ہے کہ نومبر کا صدارتی انتخاب ملک کے لیے ایک فیصلہ کن گھڑی اور حساب بےباق کرنے کا وقت ہوگا۔

ہلیری امریکہ کی سیاسی تاریخ میں کسی بھی بڑی سیاسی جماعت کی طرف سے صدارتی امیدوار بنائی جانے والے پہلی خاتون ہیں اور اس طرح انھوں نے ایک نئی تاریخ رقم کی ہے۔

٭ ’ہلیری بہترین دوست اور تبدیلی لانے والی انسان ہیں‘

٭ صدارت کے لیے ہلیری سے زیادہ کوئی اہل نہیں: اوباما

٭ برنی سینڈرز کا ہلیری کلنٹن کی حمایت کا اعلان

تصویر کے کاپی رائٹ Getty
Image caption پارٹی کے نیشنل کنونشن سے خطاب کرتے ہوئے ہلیری کلنٹن نے پارٹی میں اتحاد قائم کرنے پر زور دیا

فلیڈیلفیا میں پارٹی کے نیشنل کنونشن سے خطاب کرتے ہوئے ہلیری کلنٹن نے کہا کہ ’طاقتور قوتیں ہمیں الگ کرنا چاہتی ہیں۔‘

اس موقع پر اپنے حریف اور رپبلکن پارٹی کے صدارتی امیدوار ڈونلڈ ٹرمپ پر تنقید کرتے ہوئے ان کا کہنا تھا ’ٹرمپ ہمیں خود سے اور باقی دنیا سے تقسیم کرنا چاہتے ہیں۔‘

ڈیموکریٹک پارٹی کی صدارتی امیدوار نے کہا ’ ہم خوفزدہ نہیں ہیں، ہم چیلنجوں کا ویسے ہی سامنا کریں گے جیسا ہم ہمیشہ سے کرتے آئیں ہیں۔‘

اس سے قبل صدر اوباما اور نائب صدر جو بائیڈن نے بھی اس کنونشن سے خطاب کیا۔

دونوں رہنماؤں نے ہلیری کلنٹن کی حمایت کا اعلان کرتے ہوئے ڈونلڈ ٹرمپ پر شدید نکتہ چینی کی۔

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption صدر اوباما اور اور نائب صدر جو بائیڈن نے بھی اس کنونشن سے خطاب کیا تھا

ہلیری کلنٹن کے خطاب کے بعد صدر اواباما نے اپنی ایک ٹويٹ میں کہا: ’زبردست خطاب، وہ جانچی پرکھی ہیں۔ وہ تیار ہیں۔ وہ کبھی مقصد کو ترک کرنے والی نہیں ہیں۔ اسی لیے ہلیری کو ہی امریکہ کا اگلا صدر ہونا چاہیے۔‘

ہلیری کے خطاب کے بعد ڈونلڈ ٹرمپ نے ان کے خلاف کئی ٹویٹس کیں۔

انھوں نے لکھا: ’ہلیری کی بصارت بغیر سرحدوں کی دنیا ہے جہاں کام کرنے والوں کے پاس کوئی طاقت نہیں ہے، نہ تو کام ہے اور نہ ہی تحفظ۔‘

ایک دوسری ٹوئٹ میں انھوں نے لکھا: ’ہلیری کبھی بھی وال سٹریٹ میں اصلاح نہیں کریں گی کیونکہ وال سٹریٹ والے ہی ان کے مالک ہیں۔‘

اسی بارے میں