سعودی عرب میں حوثی باغیوں کا راکٹ حملہ، سات ہلاک

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption اب تک سعودی عرب کے جنوبی علاقوں میں حوثی باغیوں کے حملوں سے 100 سے زائد شہری اور اہلکار ہلاک ہوچکے ہیں

سعودی عرب کے سرکاری ذرائع ابلاغ کے مطابق حوثی باغیوں کے ایک راکٹ حملے میں کم از کم سات افراد ہلاک ہوگئے ہیں۔

سعودی عرب کے سرکاری ٹی وی الاخباریہ کے مطابق راکٹ حملہ یمن سرحد کے قریب واقع جنوبی شہر نجران کے صنعتی علاقے میں کیا۔

اس حملے میں چار سعودی شہری اور تین غیرملکی ہلاک ہوئے ہیں۔

اس سے قبل یمن کے دارالحکومت صنعا کے علاقے نہم میں مقامی افراد نے خبررساں ادارے روئٹرز کو بتایا تھا کہ سعودی عرب کی قیادت میں قائم اتحاد کی جانب سے ایک مقامی حوثی رہنما کے گھر کو نشانہ بنایا گیا۔ مقامی افراد کے مطابق وہ رہنما اس وقت گھر پر موجود نہیں تھا لیکن اس حملے میں اس کے والد سمیت خاندان کے آٹھ افراد ہلاک ہوگئے۔

سعودی عرب نے اتحادی افواج کے ہمراہ مارچ 2015 میں یمن میں موجود حوثی باغیوں کے خلاف جنگ کا آغاز کیا تھا۔

خبررساں ادارے اے ایف پی کے مطابق یمن میں سعودی اتحاد کی جانب شروع کی جانے والی کارروائیوں کے آغاز سے اب تک سعودی عرب کی سرزمین پر نجران میں ہونے والے حالیہ حملے میں سب سے زیادہ ہلاکتیں ہوئی ہیں۔

تصویر کے کاپی رائٹ Getty
Image caption سعودی عرب نے اتحادی افواج کے ہمراہ مارچ 2015 میں یمن میں موجود حوثی باغیوں کے خلاف جنگ کا آغاز کیا تھا

ایک مقامی شخص نے اے ایف پی کو بتایا کہ ’ہم پریشان ہیں لیکن خوفزدہ نہیں ہیں۔‘ خیال رہے کہ نجران کو اس سے پہلے بھی حوثی باغیوں کی جانب سے نشانہ بنایا جا چکا ہے۔

واضح رہے کہ یمن میں جنگ سے آغاز سے لے کر اب تک سعودی عرب کے جنوبی علاقوں میں حوثی باغیوں کے حملوں سے 100 سے زائد شہری اور اہلکار ہلاک ہوچکے ہیں۔

اقوام متحدہ کے توسط سے فریقین کے درمیان طے پانے والے امن معاہدے کے خاتمے کے بعد سرحدی علاقوں میں ایک بار پھر لڑائی میں شدت دیکھی گئی ہے۔

گذشتہ ہفتے بھی دو سعودی عرب کی سرحد کے اندر ایک راکٹ حملے میں دو شہری ہلاک ہوگئے تھے۔

اسی بارے میں