’سکیورٹی خدشات پر یورپ کی مشترکہ فوج کی تجویز‘

تصویر کے کاپی رائٹ president.gov.ua
Image caption گذشتہ برس یوکرین کے تنازع کے بعد بھی مشترکہ یورپی فوج کی تجویز دی گئی تھی

جمہوریہ چیک اور ہنگری نے کہا ہے کہ یورپ کی سکیورٹی کو بڑھانے کے لیے مشترکہ یورپی فوج قائم کرنے کی ضرورت ہے۔

دونوں ممالک نے پولینڈ کے دارالحکومت وارسا میں جرمن چانسلر اینگلا مرکل سے ملاقات سے پہلے یورپی یونین کی مشترکہ فوج کی تجویز دی۔

*یورپ میں دہشت گردی کے بڑے واقعات

جمہوریہ چیک اور ہنگری پناہ گزینوں سے متعلق جرمن چانسلر کی پالیسی کو پسند نہیں کرتے۔

ہنگری کے وزیراعظم وکٹر اوربان نے کہا کہ’ہمیں لازمی سکیورٹی کو ترجیح دینا ہو گی، اس کے لیے ایک مشترکہ یورپی فوج قائم کریں۔‘

دوسری جانب برطانیہ نیٹو کے علاوہ کسی ایسے منصوبے کی سختی سے مذمت کی ہے۔

جمہوریہ چیک کے وزیراعظم بوہوسلاف سوبوتکانے کہا ہے کہ یورپی فوج تیار کرنا کوئی آسان کام نہیں لیکن اس بات چیت شروع ہونی چاہیے۔

اس وقت یورپی کی مشترکہ دفاعی فورس 15 سو اہلکاروں پر مشتمل ہے تاہم اس فورس کو ابھی تک جنگی مقاصد کے لیے استعمال نہیں کیا گیا۔

اس سے پہلے گذشتہ برس یورپیئن کمشین کے صدر نے یوکرین کے تنازع کے بعد روسی خطرات سے نمٹنے کے لیے مشترکہ یورپی فوج کے قیام کی تجویز دی تھی۔

خیال رہے کہ یورپ میں گذشتہ کچھ عرصے سے شدت پسندی کے واقعات میں اضافہ ہوا ہے۔

اسی بارے میں