بوئنگ 747 کے ’بانی‘ جو سٹر چل بسے

Image caption سٹر اس انجینئرنگ ٹیم کے انچارج تھے جس نے 1960 کی دہائی میں 747 بنانے میں کامیابی حاصل کی تھی

بوئنگ 747 ہوائی جہازوں کے بنانے میں کلیدی کردار ادا کرنے والے ایوی ایشن انجینیئر جو سٹر 95 سال کی عمر میں انتقال کر گئے۔

بوئنگ کے کمرشل جہازوں کے کاروبار کے سربراہ رے کونر نے کہا ہے کہ سٹر نہ صرف بوئنگ بلکہ پوری ایروسپیس انڈسٹری کے لیے ایک مشعل راہ تھے۔

بوئنگ 747 کو، جس نے لمبے فاصلوں کے ہوائی سفر کا آغاز کیا، پہلی بار سنہ 1969 میں اڑایا گیا جبکہ اس کا پہلی کمرشل فلائیٹ نے سنہ 1970 میں اڑان بھری تھی۔

اس نے سب سے بڑا مسافر ہوائی جہاز ہونے کا رتبہ سنہ 2007 تک برقرار رکھا جب ائیر بس اے 308 نے اس کی جگہ لی۔

سٹر اس انجینئرنگ ٹیم کے انچارج تھے جس نے 1960 کی دہائی میں 747 بنانے میں کامیابی حاصل کی تھی۔

جو سٹر اور ان کی ٹیم کو صرف 29 ماہ کی مدت میں دنیا کا سب سے بڑا جہاز بنانے پر ’دی انکریڈیبلز‘ یا ’ناقابل یقین‘ کا خطاب دیا گیا تھا۔

جو سٹر مارچ 1921 کو امریکی شہر سیئٹل میں پیدا ہوئے۔ انھوں نے سنہ 1940 میں ایروناٹیکل انجینئرنگ کی پڑھائی کے دوران گرمیوں کی چھٹیوں میں بوئنگ کمپنی میں نوکری کا آغاز کیا۔

سن انیس سو چھیاسی میں چار دہائیوں کی باقاعدہ نوکری کے بعد وہ بوئنگ سے ریٹائر ہو گئے لیکن کنسلٹنٹ کے طور پر وہ کمپنی سے منسلک رہے۔

انھوں نے اس راجرز کمشن میں بھی خدمات انجام دیں جس نے سنہ 1986 میں خلائی شٹل چیلنجر کے حادثے کی تحقیقات کی تھیں۔