آسٹریلیا: نوآبادیاتی دور کو سراہنے پر برہمی

تصویر کے کاپی رائٹ British Colonial Co
Image caption ریستوران کی انتظامیہ کا کہنا ہے کہ وہ ذرائع ابلاغ کی رپوٹس سے ’افسردہ‘ ہیں

آسٹریلیا میں سلطنت برطانیہ کے مرکزی خیال پر ایک ریستوران پر نوآبادیاتی دور کی یادوں کو حسین بنانے اور نسلی طور پر متعصب ہونے کا الزام عائد کیا جارہا ہے۔

برسبن میں ’برٹش کالونیئل‘ نامی ریستوارن کا افتتاح جولائی میں ہوا تھا اور اس کا کہنا تھا کہ وہ سلطنت برطانیہ کے ’سٹائلش دنوں‘ کا جشن منا رہے ہیں۔

ریستوران کی انتظامیہ کی جانب سے ایسے تشہیری مواد کو ہٹا دیا گیا ہے اور ریستوران کی انتظامیہ کا کہنا ہے کہ وہ ذرائع ابلاغ کی رپوٹوں سے ’افسردہ‘ ہیں۔

ریستوران کی جانب سے جاری کردہ بیان میں کہا گیا ہے کہ ’ہمیں اپنے برانڈ، کھانے کے تجربات اور مخلص صارفین پر فخر ہے۔‘

’اس لیے آج ہم اپنے بارے میں ذرائع ابلاغ میں شائع ہونے والی باتوں پر پریشان اور افسردہ ہیں کہ ہمارے برانڈ کی وجہ سے معاشرے کے کچھ لوگوں کو دکھ اور رنج پہنچا ہے۔ ہماری یہ نیت نہیں تھی۔‘

سوشل میڈیا پر کچھ لوگوں کی جانب سے ریستوران کے تشہیری مواد میں سلطنت برطانیہ کے آسٹریلیا اور دیگر ممالک پر تباہ کن اثرات کو نظر انداز کرنے پر تنقید کا نشانہ بنایا۔

تصویر کے کاپی رائٹ Facebook
Image caption ریستوران کی انتظامیہ کی جانب سے ایسے تشہیری مواد کو ہٹا دیا گیا ہے

ریستوران کے فیس بک کے صفحے پر ایک صارف نے لکھا: ’مسئلہ یہ ہے کہ وہ نوآبادیات کو رومانوی بنا رہے ہیں اور انھیں اس حقیقت کا کوئی لحاظ نہیں ہے کہ عمومی طور پر آسٹریلیا سے اس کو نقصان پہنچا ہے۔‘

ایک اور ٹوئٹر صارف نے لکھا کہ اگر آپ برسبن میں ہیں اور ’سامراجیت اور قتل عام کا ڈنر کرنے کے موڈ میں ہیں‘ تو اس ریستوران میں جائیں۔

’کیا وہ نسلی تعصب رکھنے والے صارفین کو متاثر کر رہے ہیں؟‘

دیگر افراد کی جانب سے اس امر کا اظہار بھی کیا گیا کہ ریستوران کا نام یا اس کی آرائش دل آزاری کا باعث نہیں ہے۔

فیس بک پر ایک صارف نے لکھا: ’سلطنت پر فخر کرنے میں کچھ غلط نہیں ہے۔ برطانیہ نے دنیا بھر میں مقامی افراد کے معیار زندگی کو بہتر بنانے کے لیے مقامی افراد سے زیادہ کردار ادا کیا ہے۔‘

اسی بارے میں