گذشتہ ہفتے کا پاکستان

پاکستان میں گذشتہ ہفتے پیش آنے والے اہم واقعات تصاویر میں

،تصویر کا کیپشن

پاکستان کے فوجی حکام کا کہنا ہے کہ نکیال سیکٹر میں انڈین فوج کی گولہ باری کے نتیجے میں چار شہری زخمی ہو گئے۔ سنیچر کی شب فوج کے محکمہ تعلقاتِ عامہ آئی ایس پی آر کی جانب سے جاری بیان میں بتایا گیا کہ لائن آف کنٹرول پر نکیال سیکٹر کے گاؤں تھروٹی میں انڈیا کی گولہ باری کے نتیجے میں 65 سالہ برکت بیگم سمیت چار افراد زخمی ہوئے جن میں ایک 12 سالہ بچہ بھی شامل ہے۔

،تصویر کا کیپشن

وزیر اعظم پاکستان نواز شریف نے سنیچر کو اسلام آباد کے نئے بین الاقوامی ہوائی اڈے کادورہ کیا۔ اس موقع پر ان کا کہنا تھا کہ نئے ہوائی اڈے کا افتتاح اگست کے وسط میں کیا جائے گا۔

،تصویر کا کیپشن

پاکستان کے صوبے بلوچستان میں حکام کے مطابق افغانستان سے متصل سرحدی شہر چمن کے قریب جمعے کی صبح گولہ باری سے 12 افراد ہلاک اور کم سے کم 42 زخمی ہو گئے جس کے بعد چمن سرحد کو بند کر دیا گیا۔

،تصویر کا کیپشن

پاکستانی دفتر خارجہ کی جانب سے جاری ہونے والے بیان کے مطابق افغان ناظم الامور کو بتایا گیا کہ ’افغانستان کی جانب سے چمن کے علاقے میں بلااشتعال فائرنگ کے نتیجے میں متعدد افراد مارے گئے جبکہ کئی زخمی بھی ہوئے، جن میں خواتین اور بچے بھی شامل ہیں۔‘

،تصویر کا کیپشن

پاکستان کی سپریم کورٹ نے جمعے کو وزیر اعظم نواز شریف اور ان کے صاحبزادوں کے بیرونِ ملک اثاثوں اور کاروبار کی تحقیق کے لیے مشترکہ تحقیقاتی ٹیم کے چھ اراکین کے ناموں کا اعلان کر دیا

،تصویر کا کیپشن

بلوچستان کے صوبے بلوچستان کے صنعتی شہر حب میں جمعرات کو ہندو برادری سے تعلق رکھنے والے توہینِ مذہب کے ایک ملزم کے خلاف نکالے جانے والے جلوس نے تھانے پر حملہ کر کے اسے نذرِ آتش کرنے کی کوشش کی جس کے دوران مسلح مظاہرین کی فائرنگ سے ایک بچہ ہلاک ہو گیا۔

،تصویر کا کیپشن

پاکستان اور ایران نے سرحدی سکیورٹی فورسز کے درمیان مختلف سرحدی مسائل کے فوری حل کے لیے ہاٹ لائن بحال کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ یہ فیصلہ اسلام آباد کے 12 رکنی وفد کے ساتھ دورے پر آئے ہوئے ایران کے وزیر خارجہ محمد جواد ظریف اور وزیر داخلہ چوہدری نثار علی خان کے درمیان ایک ملاقات میں کیا گیا۔