یوم یکجہتی کشمیر: لندن میں عالمی کانفرنس اور نمائش

تصویر کے کاپی رائٹ Getty Images
Image caption پولیس نے پیلٹ گنز کا استعمال بند نہیں کیا ہے

پاکستان کے وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی پانچ فروری کو یوم یکجہتی کشمیر کے موقع پر مسئلہ کشمیر کو عالمی سطح پر اجاگر کرنے کے لیے فروری کی تین تاریخ کو لندن پہنچ رہے ہیں۔

یوم یکجہتی کشمیر کے موقع پر برطانیہ کے دورے پرروانہ ہونے سے قبل گزشتہ روز پاکستانی وزیر خارجہ نے بھارت کے زیر انتظام کشمیر میں علیحدگی پسند قیادت سے براہ راست فون پر رابطہ کر کے مسئلہ کشمیر پر پاکستان کے موقف کا اعادہ کیا اور کشمیری قیادت کو اس مسئلہ پر کشمیریوں کی سیاسی اور اخلاقی حمایت جاری رکھنے کا یقین دلایا۔

اپ کی ڈیوائس پر پلے بیک سپورٹ دستیاب نہیں
’کشمیر کا فوجی حل ممکن نہیں‘

فروری کی چار تاریخ کو وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی برطانوی پارلیمان میں ایک بین الاقوامی کشمیر کانفرنس سے خطاب کریں گے جس میں برطانوی ارکانِ پارلیمان کے علاوہ بھارت اور پاکستان سے تعلق رکھنے والے کشمیروں کی بڑی تعداد حصہ لے گی۔

اس دورے کے آخری روز یعنی پانچ فروری کو جس دن پاکستان میں یوم یکجہتی کشمیر سرکاری سطح پر منایا جاتا ہے لندن کے ایک ہوٹل میں ایک خصوصی نمائش کا اہتمام کیا گیا ہے جس میں کشمیر میں ہونے انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں کو اجاگر کیا جائے گا۔

تحریک انصاف کی حکومت کو اقتدار میں آنے کے کشمیر کے مسئلہ پر ایک مرتبہ پھر خصوصی توجہ دی جا رہی ہے۔

بھارت کے زیر انتظام کشمیر میں بھارت نے پانچ لاکھ سے زیادہ فوج اور سکیورٹی اہلکار تعینات کر رکھے ہیں۔

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں