مولوی نذیرگروپ

مولوی نذیر گروپ تصویر کے کاپی رائٹ BBC World Service
Image caption جنوبی وزیرستان کے قصبے وانا کی داخلی سڑک پر مولوی نذیر گروپ کے مسلح جنگجو پاکستان مخالف غیر ملکی جنگجوؤں کے خلاف مورچہ زن ہیں۔ مارچ 1997۔ تصویر اے پی۔

جنوبی وزیرستان میں احمد زئی قبیلے سے تعلق رکھنے والے مولوی نذیر کا شمالی وزیرستان میں سرگرم حافظ گل بہادر گروپ اور شوریٰ اتحاد المجاہدین سے قریبی تعلق ہے۔

ابتداء میں یہ اپنے علاقے میں بیت اللہ محسود کے نمائندے سمجھے جاتے تھے لیکن تحریک طالبان کے اندر اختلافات کے باعث الگ ہو کر حافظ گل بہادر کے ساتھ مل گئے اور اب افغان طالبان کے امیر ملا محمد عمر کو اپنا رہنما قرار دیتے ہیں۔

مولوی نذیر گروپ کے نو بڑے رہنماؤں کے قتل کا الزام تحریک طالبان پر لگایا گیا جب کہ انہوں نے دو ہزار سات میں اپنے علاقے میں طاہر یلدوشیف کی قیادت میں مقیم ازبک جنگجوؤں کو نکالنے کے لیے ایک بڑی جنگ لڑی۔

مولوی نذیر گروپ کو پاکستان کے حامی طالبان میں شمار کیا جاتا ہے۔