مین بکر انعام پال بیٹی کے ناول کے نام

پال بیٹی تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption سیل آؤٹ پال بیٹی کا چوتھا ناول ہے

پال بیٹی مین بکر ادبی انعام جیتنے والے پہلے امریکی مصنف بن گئے ہیں جنھیں ان کے ناول 'سیل آؤٹ' پر اس اعزاز سے نوازا گیا۔

اس ناول میں ایک نوجوان سیاہ فام امریکی نوجوان کی کہانی بیان کی گئی ہے جو لاس اینجلس میں ایک بار پھر غلامی اور نسل پرستی کی روایت بحال کرنا چاہتا ہے۔

ججوں کی کمیٹی کی سربراہ امینڈا فورمین نے کہا کہ یہ کتاب 'ہر سماجی قدغن کو تار تار کر دیتی ہے۔'

ڈچز آف کورنوال سے50 ہزار پاؤنڈ مالیت کا انعام وصول کرتے ہوئے بیٹی واضح طور پر جذبات سے مغلوب ہو گئے اور تقریر کرتے ہوئے انھیں الفاظ کے انتخاب میں مسئلہ درپیش رہا۔

انھوں نے تسلیم کیا کہ وہ 'لکھنے سے نفرت کرتے ہیں۔ یہ بڑی مشکل کتاب ہے۔ اسے لکھنا مشکل تھا، اور میں جانتا ہوں کہ اسے پڑھنا بھی مشکل ہے۔ ہر کوئی اسے اپنے زاویے سے دیکھتا ہے۔'

سیل آؤٹ نے پانچ دوسرے ناولوں کو پیچھے چھوڑتے ہوئے یہ انعام اپنے نام کیا، جن میں میڈیلین تھیئن کا ناول 'ڈو ناٹ سے وی ہیو نتھنگ' بھی شامل تھا جو سٹے بازوں کے اندازوں کے مطابق انعام حاصل کرنے کے لیے سرِفہرست تھا۔

فورمین نے کہا کہ ججوں کو متففہ فیصلے تک پہنچنے میں چار گھنٹے لگے۔ ’سیل آؤٹ ہمارے دور کا ناول ہے جس میں زبردست بےرحم فراست پائی جاتی ہے، جو جوناتھن سوئفٹ یا مارک ٹوین کی یاد دلاتی ہے۔'

'یہ کتاب اپنی خوش گوار لاپروائی سے قاری کو صلیب پر کیلوں سے ٹانک دیتی ہے، لیکن اس کے ساتھ ساتھ یہ آپ کو گدگداتی بھی ہے۔'

انھوں نے مزید کہا کہ یہ 'اول درجے کا ادب ہے جو مزاح کی چادر میں لپٹا ہوا ہے۔'

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters
Image caption پال بیٹی کے ساتھ مقابلے میں پانچ دوسرے ناول نگار بھی شامل تھے

ناول کی کہانی بون بون نامی ایک شخص کی زبانی بیان ہوتی ہے جو لاس اینجلس کے نواح میں رہتا ہے۔ کیلیفورنیا کو خفت سے بچانے کے لیے اس علاقے کو ریاست کے نقشے سے نکال دیا گیا ہے۔

غلامی بحال کرنے اور مقامی ہائی سکول میں نسلی علیحدگی کا پرچار کرنے کے الزام میں بون بون پر سپریم کورٹ میں مقدمہ چلایا جاتا ہے۔

فوئل کی ویب ایڈیٹر فرانسس گرٹلر نے سیل آؤٹ کو ذہین طنزیہ ناول قرار دیتے ہوئے کہا: 'دلیر اور مزاحیہ۔ اس کا عادی ہونے میں تھوڑی دیر لگتی ہے لیکن جب آپ عادی ہو جائیں تو پھر باہر نکلنا نہیں چاہیں گے۔'

بیٹی 1962 میں لاس اینجلس میں پیدا ہوئے تھے۔ اس سے پہلے انھوں نے تین ناول لکھ رکھے ہیں۔

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں