ڈائریکٹر کے ’متعصبانہ‘ بیان کے خلاف اداکارہ کے موقف کی تعریف

تصویر کے کاپی رائٹ Getty Images
Image caption بڑے افسوس کی بات ہے کہ ہمارے ملک میں عورتوں کے بارے اس طرح کی عامیانہ گفتگو کی جاتی ہے: تمنا بھاٹیہ

انڈیا میں شوشل میڈیا پر لوگ بالی وڈ فنکارہ تمنا بھاٹیہ کی جانب سے اپنے فلم ڈائریکٹر کے اداکاراوں کے ’گلیمریس‘ ہونے سے متعلق بیان پر سخت موقف اپنانے پر تعریف کر رہے ہیں۔

بالی وڈ کے جانے پہچانے فلم ڈائریکٹر سوراج نے اداکارہ تمنا بھاٹیہ کی نئی فلم 'کاٹھی سندائی' کے بارے میں بات کرتے ہوئے کہا کہ فلم بین ہیئروئن کو گلیمریس انداز میں دیکھنے کے لیے ٹکٹ خریدتے ہیں نہ کہ ساڑھی میں لپٹی ہوئی عورت کو۔'

ڈائریکٹر کے اس بیان کے سامنے آنے کے فوراً بعد تمنا بھاٹیہ نے ایک بیان میں کہا کہ اداکارائیں اداکاری کے لیے ہوتی ہیں اور اشیا کی فروخت کے لیے ان کی نمائش نہیں کی جانی چاہیے۔

تمنا بھاٹیہ نے فلم ڈائریکٹر کے 'صنفی تعصب' پر مبنی بیان پر سخت موقف اختیار کرتے ہوئے ان سے معافی کا مطالبہ کیا ہے۔

ڈائریکٹر سوراج تمنا بھاٹیہ کے بیان کے بعد اپنے بیان سے پھر گئے ہیں اور معافی طلب کی ہے۔

ڈائریکٹر سوراج نے کہا تھا کہ لوگ تمنا بھاٹیہ کو گلیمریس انداز میں دیکھنا چاہتے ہیں کیونکہ وہ فلم دیکھنے کے لیے رقم ادا کر رہے ہیں۔

ڈائریکٹر سوراج نے مزید کہا تھا کہ میری فلم کا لباس ڈیزائنر جب فلم کی ہیروئن کے لیے ایسا لباس تیار کرتا ہے جس کی لمبائی ہیروئن کے گھٹنوں کو چھو رہی ہو تو میں فوراً کہتا ہوں:'اس کو چھوٹا کرو۔' انھوں نے مزید کہا تھا کہ اگر میری ہیروئنیں اس پر اعتراض کرتی ہیں تو میں انھیں بتاتا ہوں لوگ اتنی رقم بغیر کسی مقصد کے ادا نہیں کرتے۔

تصویر کے کاپی رائٹ Getty Images
Image caption دیپکا پاڈوکون نے ٹائمز آف انڈیا کی ایک ٹویٹ کے جواب میں کہا تھا ’ہاں میں ایک عورت ہوں، آپ کو کوئی تکلیف ہے‘

فلم ڈائریکٹر کا بیان سامنے آنے کے فوراً بعد تمنا بھاٹیہ نے ایک بیان میں کہا کہ وہ گیارہ برسوں سے جنوبی بھارت کی فلم انڈسٹری میں کام کر رہی ہوں اور اس دوران انھوں نے ہمیشہ ایسے لباس ہہنے جنھیں پہن کر انھیں کوئی پریشانی نہیں ہوتی ہے۔

تمنا بھاٹیہ نے کہا: 'یہ بڑے افسوس کا مقام ہے کہ ہمارے ملک میں عورتوں کے بارے اس طرح کی عامیانہ گفتگو کی جاتی ہے۔'

تمنا بھاٹیہ کی ساتھی اداکارہ نیتھارا نے بھی ڈائریکٹر سوراج پر تنقید کرتے ہوئے کہا:' فلم انڈسٹری کا ایک ذمہ دار شخص کیسےایسا احمقانہ اور بے تکا بیان دے سکتا ہے۔'

نیتھارا نے کہا ’ایسے وقت جب بالی وڈ میں عورتوں کو بااختیار اور قابل عزت بنانے کے حوالے سے 'پنک' اور 'دنگل' جیسے فلمیں تیارہو رہی ہیں، سوراج کس دور میں رہ رہے ہیں؟

کئی لوگوں نے تمنا بھاٹیہ کی جانب سے ڈائریکٹر کے بیان پر سخت موقف اختیار کرنے پر ان کی تعریف کی ہے۔

ایک ٹوئٹر صارف افسر نے لکھا کہ'اس سے آپ اندازہ لگا سکتے ہیں کہ اس قسم کے معاشرے میں مشہور اداکارہ بننا کتنا مشکل ہے۔'

انڈیا میں مشہور اداکارئیں پہلے بھی نسلی تعصب کا سامنا کر چکی ہیں۔

تصویر کے کاپی رائٹ Asfar

انڈیا کے مشہور اخبار ٹائمزآف انڈیا نے 2014 میں دیپیکا پاڈوکون کی تصویر ٹویٹ کرتے ہوئے کچھ ایسا تبصرہ کیا جس پر دیپکا نے جواباً کہا:' ہاں میں ایک عورت اور میری چھاتیاں ہیں، آپ کو کوئی تکلیف ہے۔'

اسی بارے میں