ویزہ پالیسی، ایرانی اداکارہ کا آسکرز کے بائیکاٹ کا اعلان

ایران تصویر کے کاپی رائٹ Getty Images
Image caption ایرانی اداکارہ ترانے علی دوستی

ایران کی اداکارہ ترانے علی دوستی نے اعلان کیا ہے کے نئے امریکی صدر کے 'نسل پرست' ویزا اقدامات کی وجہ سے وہ آسکر ایوارڈ کی تقریب کا بائیکاٹ کر رہی ہیں۔

ترانے علی دوستی نے فلم دی سیلزمین میں اہم کردار ادا کیا تھا اور یہ فلم آسکر ایوارڈ میں بہترین غیر ملکی زبان میں بنائی جانے والی فلم کے لیے نامزد ہوئی ہے۔

میرِل سٹریپ ’اوور ریٹڈ‘ اداکارہ ہیں: ٹرمپ

انھوں نے اپنی ٹویٹ میں کہا: 'ٹرمپ کا ایرانیوں پر ویزہ کی پابندی لگانا ایک نسل پرست قدم ہے۔ چاہے یہ کسی ثقافتی تقریب کے لیے لاگو ہو یا نہیں، میں اکیڈمی ایوارڈ 2017 میں بطور احتجاج شرکت نہیں کروں گی۔'

آسکر ایوارڈ کی تقریب اگلے ماہ کی 26 تاریخ کو منعقد ہوگی۔

ابھی تک یہ واضح نہیں ہے کہ غیر ملکی زبان میں بنے والی فلم میں کام کرنے والے فنکاروں کو آسکر ایوارڈ میں شرکت کی دعوت دی گئی ہے یا نہیں۔

یاد رہے کہ صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے اپنی انتخابی مہم میں کہا تھا کے وہ مسلم ممالک کے شہریوں کا امریکہ میں داخلہ مکمل طور پر ختم کر دیں گے لیکن حال ہی میں اے بی سی نیوز کو انٹرویو میں انھوں نے کہا وہ مسلمانوں پر پابندی کے بجائے ان ممالک پر پابندی لگائیں جہاں سے 'زبردست دہشت گردی' کا خدشہ ہے۔

امریکی میڈیا کے مطابق ایک آٹھ صفحہ کے مسودے سے یہ ظاہر ہوتا ہے کہ صدر ٹرمپ بہت جلد ایک اعلان کے ذریعے سات مسلم ممالک کے باشندوں پر 30 دن کے لیے ویزا جاری کرنے پر پابندی لگا دینگے۔

اخبار نیو یارک ٹائمز میں شائع ہونے والے اس مسودے میں جن ممالک کے نام ہیں ان میں ایران بھی شامل ہے۔

البتہ وائٹ ہاؤس نے اس دستاویز پر تبصرہ کرنے سے انکار کیا ہے۔

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں