بالی وڈ اداکار نواز الدین صدیقی نے اپنی سرگزشت واپس لے لی

نوازالدین صدیقی تصویر کے کاپی رائٹ Getty Images
Image caption نوازالدین صدیقی کی متنازع سرگزشت کو تنقید کا نشانہ بنایا جا رہا ہے کیونکہ انھوں نے جن خواتین سے اپنے رشتے کی تفصیلات بیان کی ہیں وہ ان کی اجازت کے بغر شامل کی گئی ہیں

بالی وڈ کے اداکار نواز الدین صدیقی نے اپنی سرگزشت واپس لے لی ہے جس میں انھوں نے متعدد خواتین کے ساتھ اپنے رشتے کی تفصیل بغیر ان کی اجازت کے شامل کی ہے۔

'این آرڈینری لائف' نامی ان کی سرگزشت 16 اکتوبر کو ریلیز ہوئی تھی جس میں اداکار نے اپنی ساتھی اداکارہ نہاریکا سنگھ کے علاوہ کئی خواتین کے ساتھ اپنے تعلقات کو تفصیل سے بیان کیا تھا۔

نہاریکا سنگھ نے ایک بیان میں کہا کہ 'انھوں نے جو کچھ لکھا اس کے بارے میں مجھے کوئی علم نہیں اور میری مرضی لینے کا تو سوال ہی نہیں ہے۔'

نوازالدین صدیقی نے سوشل میڈیا پر معافی مانگی ہے۔

پیر کو دیر گئے اپنے فیس بک اور ٹوئٹر اکاؤنٹ پر انھوں نے لکھا: 'میں ہر اس شخص سے معافی مانگتا ہوں جن کے جذبات ہماری یاد داشت 'این آرڈینری لائف' کی بدنظمی سے مجروح ہوئے ہیں۔ اس کا مجھے افسوس ہے اور اس لیے میں نے اپنی کتاب واپس لینے کا فیصلہ کیا ہے۔'

تصویر کے کاپی رائٹ Getty Images
Image caption نوازالدین صدیقی اور اداکارہ نہاریکا سنگھ

انھوں نے کسی بھی خاتون سے ذاتی طور پر معافی نہیں مانگی جن کا انھوں نے اپنی کتاب میں ذکر کیا ہے۔

انھوں نے کتاب میں مذکور ایک دوسری خاتون کی شکایت کے بعد معافی مانگی جنھیں نوازالدین نے اپنی 'پہلی گرل فرینڈ' کہا ہے۔ خاتون نے فیس بک پر 'غیر معمولی جھوٹ' کا الزام لگایا تھا۔

43 سالہ اداکار نے لکھا کہ اس خاتون نے ان سے اس لیے رشتہ توڑ لیا کہ اس وقت جب دونوں ساتھ تھے تو وہ فلموں میں 'جدوجہد کر رہے تھے۔'

خاتون نے لکھا: 'میں نے تمہیں اس لیے نہیں چھوڑا کہ تم غریب تھے بلکہ اس لیے چھوڑا کہ تمہاری سوچ غریب تھی۔'

نوازالدین صدیقی کا بالی وڈ کے گنے چنے باصلاحیت اداکاروں میں شمار ہوتا ہے۔ انھوں نے 'گینگز آف واسع پور' اور 'لنچ باکس' جیسی فلمیں دی ہیں۔

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں