’مجھ سے بار بار فحش حرکت کرنے کو کہا گیا‘

تصویر کے کاپی رائٹ Getty Images

آسٹریلوی اداکارہ ریبل ولسن اینٹرٹینمٹ کی دنیا میں جنسی طور پر ہراساں کیے جانے کے بارے میں بتانے والی نئی ہالی وڈ سٹار ہیں۔

ایک سلسلہ وار ٹویٹس میں ریبل ولسن نے الزام لگایا کہ ’ایک اعلیٰ درجے کے مرد سٹار‘ نے ان سے بار بار ایک فحش حرکت کرنے کو کہا تھا۔

انھوں نے کہا کہ ’میں نے ایسا کرنے سے انکار کر دیا کیونکہ یہ سب انتہائی برا تھا۔‘

یہ بھی پڑھیے

’جنسی شکاری‘ اساتذہ کے نام منظر عام پر

نیٹ فلیکس نے ہاؤس آف کارڈز کی پرڈکشن روک دی

اداکارہ ریبل ولسن نے کہا کہ اس سٹار جن کا نام ظاہر نہیں کیا گیا کے دوست نے ان کے کمرے سے جانے سے قبل اس سارے واقعے کی ویڈیو بھی بنانے کی کوشش کی تھی۔

انھوں نے فلم سٹوڈیو سے اس جھگڑے کی شکایت بھی کی لیکن ان کا کہنا ہے کہ ’بعد میں انھیں اسی سٹار کے نمائندوں میں سے ایک نے دھمکایا تھا‘۔

اداکارہ نے ایک اور واقعے کی جانب بھی اشارہ کیا جو ان کے بقول ’ایک ٹاپ ڈائریکٹر کے ساتھ ہوٹل کے کمرے میں پیش آیا تھا۔‘

انھوں نے بتایا کہ ’جسمانی طور پر کچھ نہیں ہوا تھا کیونکہ اسی وقت اس ڈائریکٹر کی بیوی کی فون کال آگئی اور انھوں نے اپنے شوہر کو اداکاراؤں کے ساتھ سونے پر گالیاں دینا شروع کر دیا، اور اسی دوران میں وہاں سے فوراً نکل گئی۔‘

ولسن نے مزید کہا کہ ’اگر میں ایسے رویے دیکھتی ہوں، اگر ایسا میرے ساتھ یا کسی اور کے ساتھ جسے میں جانتی ہوں ہوتا ہے تو میں پھر نرمی کا مظاہرہ نہیں کروں گی۔‘

خیال رہے کہ حالیہ دنوں میں عوامی شخصیات کے خلاف ایسے ہی جنسی طور پر ہراساں کرنے کے الزام لگانے کے واقعات میں اضافہ ہوا ہے۔

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں