’پدماوتی‘ کے بارے میں دیپکا کے بیان پر تنازع

دیپکا پاڈوکون تصویر کے کاپی رائٹ Getty Images
Image caption دیپکا پاڈوکون کے بیان پر ملا جلا رد عمل ہے

بالی وڈ کی اداکارہ دیپکا پادوکون نے کہا ہے کہ ان کی فلم 'پدماوتی' کی ریلیز میں کوئی چیز حائل نہیں ہو سکتی۔

انھوں نے یہ بات منگل کو انڈین میڈیا سے بات کرتے ہوئے کہی جبکہ اسی دن ریاست راجستھان کے شہر کوٹا میں ایک سنیما ہال میں اس فلم کے ٹریلر کی سکریننگ پر راجپوت سینا کے درجنوں کارکنوں نے ہنگامہ آرائی بھی کی۔

سنجے لیلا بھنسالی کی فلم پدماوتی اوائل سے ہی تنازعے کا شکار رہی ہے اور حالیہ واقعے پر خبررساں ادارے آئی اے این ایس سے بات کرتے ہوئے فلم میں پدماوتی کا کردار نبھانے والی اداکارہ دیپکا نے کہا: 'یہ وحشت انگیز ہے۔ مکمل طور پر وحشت انگیز۔ ہم لوگ کہاں پھنس گئے ہیں۔ ایک قوم کی حیثیت سے ہم کہاں پہنچ گئےہیں۔ ہم لوگ پیچھے چلے گئے ہیں۔'

سلمان خان سمیت بالی وڈ کے کئی لوگ فلم کی حمایت میں سامنے آئے ہیں جبکہ بی جے پی کے رہنما سبرامنیم سوامی نے دیپکا کے بیان کو تنقید کا نشانہ بنایا ہے۔

انھوں نے اپنے ایک ٹویٹ میں کہا: 'اداکارہ دیپکا پادوکون ہمیں رجعت پذیری پر لیکچر دے رہی ہیں! ملک اُسی وقت ترقی کرسکتا ہے جب ان کے نظریے کے مطابق ایسا ہو۔'

بہرحال دیپکا پادوکون کو پورا بھروسہ ہے کہ فلم یکم دسمبر کو ریلیز ہوگی۔

انھوں نے کہا کہ 'ایک خاتون کے طور پر مجھے اس فلم کا حصہ ہونے پر فخر ہے اور اس کی کہانی کہنے پر جس کے کہے جانے کی ضرورت ہے اور اسے ابھی کہا جانا چاہیے۔'

تصویر کے کاپی رائٹ Twitterr/@@Swamy39
Image caption سبرامنیم سوامی نے کے ٹویٹ کو تین ہزار بار ری ٹویٹ کیا گيا ہے

یہ بھی پڑھیں

٭ بھنسالی پر حملے کے خلاف بالی وڈ کا سخت رد عمل

٭ فلم پدماوتی کے سیٹ پر پھر توڑ پھوڑ

٭ انڈین فلمیں انتہا پسندوں کے نرغے میں؟

جبکہ سبرامنیم سوامی نے ایک ٹویٹر ہینڈل ہرشا اگروال کے ٹویٹ کو ری ٹویٹ کیا ہے جس میں انھوں نے لکھا: ایک خاتون کے طور پر مجھے ایسی فلم کی اجازت نہیں دینی چاہیے جو رانی پدماوتی کے وقار کو ذرہ برابر بھی کم کرے۔‘

انھوں نے یہ بھی کہا کہ ’اگر اس میں تاریخ کے برعکس کوئی چیز بھی دکھائی جاتی ہے تو اس پر پابندی عائد کر دینی چاہیے اور اس کے اداکاروں، فلم ساز اور ہدایتکار کے خلاف مقدمہ دائر کیا جانا چاہیے۔'

دوسری جانب انڈیا کے اہم اخبار دا ٹائمز آف انڈیا کے مطابق راجستھان کے وزیر داخلہ نے گلاب چند کٹاریا نے کہا ہے کہ 'ہم کسی کو اس فلم کی مخالفت کرنے سے روک نہیں سکتے۔ بہر حال ہم کسی کو ایسا کرنے کے لیے قانون اپنے ہاتھ میں نہیں لینے دیں گے۔'

خیال رہے کہ ابتدا میں فلم پدماوتی کے سیٹ پر توڑ پھوڑ مچانے اور فلم ساز کو مارنے پیٹنے کے علاوہ گذشتہ ماہ سورت میں اس کے متعلق ایک رنگولی کو خراب کرنے اور اس کے فنکار کو ڈرانے دھمکانے کے واقعات بھی پیش آ چکے ہیں۔

دیپکا پاڈوکون نے کہا: 'ہم لوگ صرف سینسر بورڈ کو جوابدہ ہیں اور مجھے معلوم ہے اور میرا خیال ہے کہ فلم کو ریلیز ہونے سے کوئی چیز نہیں روک سکتی ہے۔'

اس سے قبل سٹار اداکار سلمان خان نے سنجے لیلا بھنسالی کی حمایت کی ہے اور کہا ہے کہ 'ان کا ٹریک ریکارڈ بتاتا ہے کہ وہ کسی کردار کو خراب روشنی میں پیش نہیں کریں گے۔'

بہرحال فلم پر تنازع جاری ہے اور سوشل میڈیا میں جہاں لوگ فلم کی حمایت میں نظر آ رہے ہیں وہیں بعض حلقوں سے اس کی مخالفت بھی جاری ہے۔

اسی بارے میں