اسرائیل: میوزک کنسرٹ کا بائیکاٹ کروانے پر مقدمہ

تصویر کے کاپی رائٹ Getty Images

اسرائیل کی ایک قانونی تنظیم نے نیوزی لینڈ کی دو خواتین کے خلاف پاپ سنگر لارڈے کو اسرائیل میں میبنہ طور پر میوزک کنسرٹ منسوخ کرنے کے لیے قائل کرنے پر مقدمہ دائر کر دیا ہے۔

خیال ظاہر کیا جا رہا ہے کہ یہ سنہ 2011 کے اسرائیلی قانون کے تحت کسی فرد کے خلاف اسرائیل کا بائیکاٹ کرنے پر دائر کیا جانے والا پہلا مقدمہ ہے۔

اس کے مخالفین کا کہنا ہے کہ یہ مقدمہ کسی کو دم گھونٹ کر مارنے کی طرح ہے۔

واضح رہے کہ نیوزی لینڈ کی دو خواتین نے گذشتہ ماہ اپنی ہم وطن پاپ سٹار لارڈے کو ایک کھلا خط لکھا تھا جس میں انھیں ’اسرائیل کے آرٹسٹک بائیکاٹ میں شمولیت اختیار کرنے کے لیے موقف اختیار کرنے کا کہا تھا۔‘

نیوزی لینڈ کی جسٹن ساکس اور نادیہ ابو شاناب نے لارڈلے کے رواں برس جون میں تل ابیب میں منعقد ہونے والے میوزک کنسرٹ کے بارے میں دلیل دی کہ یہ سنہ 1967 کی جنگ کے بعد سے مغربی کنارے اور مشرقی یروشلم پر اسرائیل کے قبضے کی حمایت کرے گا۔

یہ بھی پڑھیے

اسرائیل: فوجیوں کے آگے ڈٹ جانے والی فلسطینی لڑکی پر فردِ جرم عائد

دونوں نے نیوزی لینڈی کا ماراوری نام کا استعمال کرتے ہوئے کہا ’ہم اوتیاؤروا میں رہنے والی دو خواتین ہیں، ایک یہودی اور ایک فلسطینی، اس بارے میں بہت برا محسوس کرتی ہیں۔‘

پاپ سنگر لارڈلے نے ان خواتین کو جواب دیتے ہوئے کہا کہ وہ اس بارے میں اپنے آپشنز پر غور کر رہی ہیں۔ اس کے چند دنوں بعد لارڈلے نے اپنا میوزک کنسرٹ منسوخ کر دیا۔

خیال رہے کہ سنہ 2011 کا اسرائیلی قانون سول مقدمات کے ذریعے 'کسی بھی ایسے فرد جو اسرائیل کی ریاست کے بائیکاٹ کا مطالبہ کرے اور اس کے مواد اور حالات سے بائیکاٹ کی توقع ہو تو' ہونے والے نقصانات کے ازالے کا اختیار دیتا ہے۔

اسرائیل کے شرت ہادین نامی ایک قانونی تنظیم نے بدھ کو نیوزی لینڈ کی جسٹن ساکس اور نادیہ ابو شاناب کے خلاف ’ایک طے شدہ میوزک کنسرٹ کو منسوخ کرنے میں اپنا کردار ادا کرنے پر مقدمہ دائر کرنے کا اعلان کیا تھا۔

نامہ نگاروں کا کہنا ہے کہ اس قانون کو عدالت میں ٹیسٹ نہیں کیا گیا اور بائیکاٹ کے مطالبے اور اصل بائیکاٹ کے درمیان ایک تعلق ثابت کرنا مشکل ہو سکتا ہے۔

اگر مدعی اس مقدمے میں کامیاب ہوتے ہیں تو یہ واضح نہیں ہے کہ عدالتی حکم بیرون ملک کس طرح نافذ ہو سکتا ہے تاہم شرت ہدین گروپ کا کہنا ہے کہ اسے امید ہے کہ یہ اسرائیل اور نیوزی لینڈ کے درمیان پائے جانے والے موجودہ قانونی معاہدوں کو کور کرتا ہے۔

اسی بارے میں