پہلاج نہلانی: ’میری فلم میں نہ سیکس ہے نہ تشدد پھر 20 کٹ کیوں لگائے‘

تصویر کے کاپی رائٹ Universal PR
Image caption رنگیلا راجا میں گوندا ڈبل رول میں ہونگے

سینسر بورڈ کے سابق چیئرمین پہلاج نہلانی اپنی فلم رنگیلا راجا میں 20 کٹ لگنے سے شدید ناراض ہیں۔

پہلاج نہلانی کا کہنا ہے کہ انکی فلم میں بِلا وجہ کٹ لگائے گیے ہیں۔ انکی کی فلم میں گوندا ڈبل رول میں ہیں۔

یہ بھی پڑھیئے

انڈین فلم انڈسٹری سے بہت کچھ سیکھنے کو ملا: صبا قمر

’سیکس کے بدلے کام کی پیشکش ہوئی تھی‘

ویوین رچرڈز کے بچے کی بن بیاہی ماں کی زندگی

بی بی سی سے بات کرتے ہوئے پہلاج نہلانی کا کہنا تھا کے ان کی فلم میں جو سین کاٹے گئے ہیں وہ سینسر بورڈ کے ضابطوں کے خـلاف ہیں اور یہ کٹ محض انہیں پریشان کرنے کے لیے لگائے گیے ہیں۔

تصویر کے کاپی رائٹ Universal PR
Image caption پہلاج نہلانی خود سینسر بورڈ کے چییرمین رہ چکے ہیں

انکا کہنا تھا کہ 'جب میں سینسر بورڈ میں تھا تب میں حکومت تک کے دباؤ میں نہیں آتا تھا۔ وزارتیں ہمیشہ دباؤ ڈالتی ہیں لیکن میں نے کبھی حکومت کی بات نہیں سنی۔

نہلانی کہتے ہیں کہ بطور فلسماز انہیں کبھی بھی سینسر بورڈ سے شکایت نہیں ہوئی تھی۔

انکا کہنا تھا 'میری فلم میں سیکس، تشدد یا بیہودہ پن نہیں ہے اس کے باوجود بیس کٹ لگائے گئے۔

’آج مرکز میں بھارتیہ جنتا پارٹی رام مندر کے نام پر سیاست کر رہی ہے لیکن میری فلم میں رام کے نام پر ایک ہی سین تھا اس کو بھی کاٹ دیا گیا۔‘

تصویر کے کاپی رائٹ Universal PR
Image caption فلم میں رام سے متعلق ڈائلاگ بھی کاٹ دیے گئے: پہلاج نہلانی

انکا کہنا تھا کہ فلم کی شروعات میں ہی ڈس کلیمر دیدیا تھا کہ یہ فلم سچی کہانی پر نہیں اور اس کے کردار بھی تصوراتی ہیں پھر بھی سینسر بورڈ کو چار پانچ ڈس کلیمر اور چاہئیں۔

پہلاج نہلانی نے اس فیصلے کے خلاف ممبئی ہائی کورٹ میں اس فیصلے کے خلاف اپیل داخل کی ہے۔یہ فلم آٹھ نومبر کو ریلیز ہونی تھی لیکن سرٹیفکیٹ نہ ملنے کے سبب اس کی ریلیز ڈیڈ آگے بڑھا دی گئی ہے۔ پہلاج نہلانی کا کہنا ہے کہ عامر خان کی فلم ٹھگ آف ہندوستان ان کی فلم کے بعد سینسر بورڈ کے سامنے پیش کی گئی تھی اور اس فلم کو سرٹیفکیٹ دیدیا گیا ’کیونکہ عامر اور سینسر بورڈ کے چیئرمین پرسن جوشی اچھے دوست ہیں۔‘

متعلقہ عنوانات