انڈین فلم انڈسٹری کے پہلے سپر سٹار کی کہانی: ’راجیش کھنہ کی گاڑی کی دھول سے لڑکیاں مانگ بھر لیا کرتی تھیں‘

  • ریحان فضل
  • بی بی سی نامہ نگار
راجیش کھنا
،تصویر کا کیپشن

راجیش کھنا

راجیش کھنہ اصل معنی میں انڈین فلم انڈسٹری کے پہلے سپر سٹار تھے۔

اپنے بالوں کے سٹائل، بڑے کالر والی شرٹ اور پلکوں کو جھکا کر نگاہوں سے تیر چھوڑنے کی ادا سے انھوں نے فلموں کے مداحوں کا دل جیت لیا تھا۔

راجیش کھنہ کی زندگی کے بارے میں ’دی انٹولڈ سٹوری آف انڈیاز فرسٹ سپر سٹار‘ کتاب لکھنے والے یاسر عثمان نے ایک بار ایک بنگالی خاتون سے پوچھا کہ راجیش کھنہ ان کے لیے کیا اہمیت رکھتے ہیں۔ یاسر کے بقول اس خاتون نے کہا کہ ’آپ نہیں سمجھیں گے۔ جب ہم ان کی فلم دیکھتے ہیں تو یہ ویسا ہی ہوتا ہے جیسے ہم ان کے ساتھ ملاقات کر رہے ہوں۔ ہم فلم دیکھنے کے لیے میک اپ کر کے، بیوٹی پارلر جا کر اور اچھے کپڑے پہن کر جاتی تھیں۔ ہمیں لگتا تھا وہ پردے پر جب پلکیں جھپکا رہے ہیں یا مسکرا رہے ہیں تو وہ ہمارے ہی لیے کر رہے ہیں۔‘

انھوں نے بتایا کہ ہال میں بیٹھی ہر لڑکی کو ایسا ہی محسوس ہوتا تھا۔

یہ بھی پڑھیے

یاسر نے بتایا کہ ’ان کی سفید رنگ کی گاڑی لڑکیوں کی لپسٹک سے لال ہو جاتی تھی اور ان کی گاڑی کی دھول سے لڑکیاں اپنی مانگ بھر لیا کرتی تھیں۔ یہ سنے سنائے نہیں بلکہ سچے واقعات ہیں۔‘

،تصویر کا ذریعہGetty Images

،تصویر کا کیپشن

داماد اکشے کمار اور اہلیہ ڈمپل کپاڈیا کے ساتھ راجیش کھنہ

آغاز سے ہی مغرور اور لیٹ لطیف

راجیش کھنہ کے بارے میں مشہور تھا کہ وہ ہمیشہ سے ’لیٹ لطیف‘ اور مغرور شخص تھے۔

جب میں نے لوگوں سے پوچھا کہ کیا وہ شروع سے ہی ایسے تھے تو پتہ چلا کہ ان کی پہلی فلم ’راز‘ کی شوٹنگ کے پہلے ہی دن انہیں صبح آٹھ بجے بلایا گیا تھا۔ لیکن وہ گیارہ بجے سیٹ پر پہنچے۔ سب حیران تھے کہ یہ تو نیا لڑکا ہے، اپنی شوٹنگ کے پہلے ہی دن اتنا لیٹ کیسے ہو سکتا ہے؟ سب انہیں گھور کر دیکھ رہے تھے۔ کچھ سینیئر لوگوں نے انہیں ڈانٹا بھی۔ راجیش کھنا نے کہا کہ ’دیکھیے ایکٹنگ اور کریئر کی ایسی کی تیسی۔ میں کسی بھی چیز کے لیے اپنا لائف سٹائل نہیں بدلوں گا۔‘ اس تیور کے ساتھ دو ہی باتوں کے امکان ہوتے ہیں، یا تو انسان بہت اوپر جاتا ہے یا بہت نیچے۔

،تصویر کا ذریعہARADHANA FILM POSTER

،تصویر کا کیپشن

فلم آرادھنا نے راجیش کھنہ کو راتو رات سٹار بنا دیا

آرادھنا سے ملی مقبولیت

جس فلم نے راجیش کھنہ کو مشہور بنا دیا وہ تھی شرمیلا ٹیگور کے ساتھ ’آرادھنا‘۔ یوں تو یہ فلم شرمیلا ٹیگور کے لیے بنائی گئی تھی لیکن اس سے زیادہ مدد راجیش کھنہ کو ملی۔

یہ بھی پڑھیے

یاسر عثمان بتاتے ہیں کہ اس فلم میں راجیش کھنہ کا چھوٹا سا کردار تھا۔ وہ شرمیلا ٹیگور کے شوہر بنے تھے جو فلم کے آغاز میں ہی وفات پا جاتے ہیں۔ لیکن جیسے جیسے فلم کی شوٹنگ آگے بڑی یہ طے ہوا کہ شرمیلا ٹیگور کے بیٹے کا کردار بھی راجیش کھنہ کو ہی دیا جائے۔‘

،تصویر کا کیپشن

’دا انٹولڈ سٹوری آف انڈین سپر سٹار‘ لکھنے والی یاسر عثمان کے ساتھ بی بی سی سٹوڈیو میں ریحان فضل

’شروع میں کہانی کا اہم کردار ماں کا تھا۔ لیکن فلم کے ختم ہونے تک راجیش کھنہ کا ڈبل رول ہو چکا تھا۔ فلم کا پرموشن اس طرح کیا گیا جیسے وہ شرمیلا ٹیگور کے لیے مدر انڈیا فلم جیسی اہمیت رکھتی ہو۔ لیکن پریمیئر پر فلم دیکھ کر باہر نکلنے والے شرمیلا ٹیگور کی بجائے اس لڑکے کی بات کر رہے تھے۔‘

راجیش کھنہ نے ایک انٹرویو میں بتایا تھا کہ ’میں شو شروع ہونے سے پہلے سب سے ہیلو بول رہا تھا۔ کوئی جواب تک نہیں دے رہا تھا۔ شو کے بعد وہی لوگ مجھے ڈھونڈتے ہوئے آئے۔ میں تب تک ہوٹل چلا گیا تھا۔ مجھے ہوٹل سے بلایا گیا کہ آئیے آپ کے بارے میں پوچھا جا رہا ہے۔‘

اس کے بعد انہوں نے مسلسل 13-14 ہٹ فلمیں دیں۔ ایسی مثال آج تک انڈین فلموں میں نہیں ملتی۔

عثمان بتاتے ہیں کہ اس زمانے میں سوشل میڈیا تھا اور نہ ہی ٹی وی چینلز، ایسے میں ایک لڑکے کا لوگوں کے دلوں پر قبضہ کر لینا کوئی معمولی بات نہیں تھی۔ ان کی ہر فلم ہٹ اور بلاک بسٹر ہو رہی تھی۔

بڑے بڑے تھئیٹرز میں چھ سات مہینے صرف راجیش کھنہ کی فلمیں چلتی رہیں۔

،تصویر کا ذریعہGetty Images

،تصویر کا کیپشن

فلموں کے مصنف سلیم خان

ہندی فلموں کے مشہور مصنف سلیم خان نے بتایا کہ راجیش کھنہ کے لیے لوگوں میں ایسی دیوانگی تھی جو انہوں نے اس سے پہلے کبھی دیکھی نہ اس کے بعد۔

یہ بھی پڑھیے

ان کا خیال ہے کہ ’لوگ راجیش کھنا میں خود کو دیکھتے تھے۔ ان کی مسکراہٹ لڑکیوں کو اپنی طرف کھینچتی تھی۔ ان کی آواز تو اچھی تھی ہی، ان کی فلموں کے گانے بھی بہت عمدہ ثابت ہوئے۔‘

،تصویر کا ذریعہGetty Images

،تصویر کا کیپشن

اداکارہ انجو مہیندرو کی راجیش کھنہ سے گہری دوستی تھی

انجو مہیندرو سے رشتہ

یوں تو راجیش کھنہ پر مرنے والی لڑکیوں کی کمی نہیں تھی لیکن ان کی سب سے نزدیکی دوست تھیں اداکارہ انجو مہیندرو۔ یاسر عثمان نے بتایا کہ ’انجو ان کی زندگی میں تب سے تھیں جب وہ فلمیں حاصل کرنے کے لیے مشکلات سے گزر رہے تھے۔ انجو نے ان کا بہت ساتھ دیا۔ انجو بھی ان دنوں سٹرگل کر رہی تھیں۔ جب وہ سٹار بن گئے تب وہ انجو کے گھر جایا کرتے تھے۔ گھر کے باہر کھڑی گاڑی کو سکول کی لڑکیاں گھیر کر کھڑی ہو جاتی تھیں۔ اور پھر راجیش کھنہ اور انجو کے رشتوں میں دراڑ آ گئی۔

وہ بہت بڑے سٹار بن گئے لیکن چاہتے تھے کہ انجو بھی ان کے ساتھ ایک سٹار کی طرح پیش آئیں۔ لیکن انجو کہتی تھیں کہ ’میرے لیے تو وہ وہی پرانے شخص تھے، لیکن وہ چاہتے تھے کہ میں ان کے ساتھ اس طرح پیش آؤں جس طرح سٹار کے ساتھ پیش آیا جاتا ہے۔ میرے لیے یہ ممکن نہیں تھا۔‘

راجیش کھنہ کو اپنے ارد گرد تعریف کرنے والوں کی بہت چاہ تھی۔ انجو کو ان کے بارے میں جو بات غلط لگتی تھی وہ ان سے کہہ دیا کرتی تھیں۔ لیکن کامیابی حاصل ہونے کے بعد وہ انجو کو کم وقت دینے لگے۔

،تصویر کا ذریعہGetty Images

،تصویر کا کیپشن

بعد میں راجیش کھنہ ڈمپل کپاڈیا سے ملے اور ان سے فوراً شادی کر لی

یاسر نے بتایا کہ ’چند روز بعد ہی راجیش کھنہ کی زندگی میں ڈمپل کپاڈیا آئیں۔ وہ عمر میں بہت چھوٹی تھیں۔ تین چار دنوں کے اندر انہوں نے ڈمپل سے شادی کا فیصلہ کر لیا۔ انجو کو اس بارے میں بہت بعد میں پتہ چلا۔‘

جب راجیش کھنہ کی بارات بمبئی کے باندرا علاقے سے جوہو جا رہی تھی تو انہوں نے بیچ میں ہی راستہ بدل لیا۔ وہ بارات کو انجو کے گھر کے سامنے سے لے گئے۔ شاید راجیش کھنا کی شخصیت میں ہمیشہ سے یہ بات شامل تھی کہ ’میں بتاتا ہوں میں کیا چیز ہوں۔‘ یہ الگ بات ہے کہ بعد میں ان کی انجو سے دوبارہ دوستی ہو گئی تھی۔‘

،تصویر کا ذریعہJUNIOR MEHMOOD

،تصویر کا کیپشن

اداکارہ ممتاز کے ساتھ راجیش کھنہ

کہا جاتا ہے کہ راجیش کھنہ اپنی کامیابی کو ٹھیک سے سنبھال نہیں پائے۔

یاسر عثمان نے بتایا کہ ’ناکامی سے زیادہ کامیابی نے لوگوں کو برباد کیا ہے۔ کامیابی دہرا نشہ ہے۔ کامیابی کے ساتھ بہت دولت بھی آتی ہے۔ اس کی زیادتی ہوتی ہے تو انسان لڑکھڑا کر گر بھی سکتا ہے۔ کامیابی کو ہضم کرنا مشکل ہوتا ہے۔‘

راجیش کھنہ بھی توازن نہیں رکھ پائے۔ وہ کامیابی بڑھنے کے ساتھ ساتھ مغرور ہوتے چلے گئے۔

،تصویر کا ذریعہNAMAK HARAAM FILM POSTER

،تصویر کا کیپشن

امیتابھ بچن کی کامیابی نے راجیش کھنہ کو دھچکا پہنچایا

فلموں میں ’اینگری ینگ میں‘ کا دور

فلموں میں اینگری ینگ میں کا دور شروع ہوتے ہی رومانوی کردار ادا کرنے والے اداکار مشکل میں آ گئے۔ راجیش کھنہ نے چند ایسی فلموں میں کام کیا جنہوں نے ان کے کریئر کو بہت نقصان پہنچایا۔ یاسر عثمان کہتے ہیں کہ ’دور بدل رہا تھا، لوگ رومانس سے ایکشن کی طرف جا رہے تھے۔ اسی وقت زنجیر آ گئی۔ اس کے بعد شولے اور دیوار۔ غصے والے کردار ابھرنے لگے۔ راجیش کھنا رومانوی فلموں کے ایکٹر تھے۔‘

اچانک فلموں کا ٹرینڈ بدلنے سے وہ ڈیپریشن میں چلے گئے۔ فلم نمک حرام کے ایک سین میں امیتابھ بچن کے لیے تھئیٹر میں ویسا ہی شور ہوا جیسا راجیش کھنہ کے لیے آرادھنا کے وقت ہوا تھا۔ لوگ امیتابھ بچن جیسا ہیئر سٹائل بنوانے لگے۔ جب راجیش کھنہ کے بالوں کا سٹائل دو روپے میں کٹ رہا تھا تبھی امیتابھ بچن کا تین روپے میں کٹنے لگا تھا۔