فوجی رنگروٹ کا گڑھا

فوجی پریڈ

فوجی رنگروٹ کا گڑھا

کرنل صاحب کا آرڈر تھا

میں نے گڑھا کھودا

کرنل صاحب نے کہا

یہ مٹی کا ڈھیر کیوں بنا دیا جوان

میں نے گڑھا کھودنے کا آرڈر دیا تھا

مٹی کا ڈھیر بنانے کا نہیں

بریگیڈیرصاحب دیکھیں گے

تو اُلٹا لٹکا دیں گے

چلو کھودو ایک اور گڑھا

اور غائب کرو یہ مٹی

اگر یہ مٹی کا ڈھیر

میرے گاؤں میں ہوتا

تو آوارہ کتے

آوارہ کتوں والی حرکتیں کرتے

گاؤں کے بچے چھلانگیں لگاتے

خوش ہوتے

لیکن یہاں چھاؤنی میں تو پتا بھی ہلے

تو قومی سلامتی خطرے میں پڑھ جاتی ہے

ملک کو بچانے کے لیے

ایک اور گڑھا کھودا

پہلے سے ذرا گہرا

مٹی کا ایک اور ڈھیر بنا

پھر ایک اور گڑھا

آرڈر دیتے دیتے

کرنل صاحب کی مونچھوں میں

چاندی اتر آئی

اور آرڈر مانتے مانتے

میرے ہاتھوں میں رعشہ

کرنل صاحب نے ایک دن کہا

کاش ہم نیوی میں ہوتے

چمکتی سفید وردیاں پہنتے

دنیا گھومتے

نہ مجھے گڑھا کھودنے کا آرڈر

دینا پڑتا

نہ تمہیں مٹی کے ڈھیر لگانے پڑتے

پھر آہ بھر کے بولے

لیکن نیوی بھی تو وہ نیوی نہیں رہی

جس ملک میں بحریہ سے زیادہ

بحریہ ٹاؤن کی عزت ہو

جہاں قزاق لوٹتے ہوں

اور میڈل پاتے ہوں

وہاں سمندروں کا مزاج

بھی بدل جاتا ہے

دریا سمندر تک

پہچنے سے پہلے

سوجاتے ہیں

بڑی مچھلی

چھوٹی مچھلی کو کھانے سے پہلے

اس کے ساتھ زنا بالجبر بھی کرتی ہے

لیکن شکر ہے

یہ مٹی نرم ہے

ذرا سوچو

اگر ہم پتھریلے پہاڑوں میں ہوتے

یا کسی گلیشیر پر

جہاں ہمارے بھایئوں کو

برف میں گڑھے کھودنے پڑتے ہیں

تو خدا کا شکر کرو

کہ یہ مٹی نرم ہے

کدال اُٹھاؤ

اور شروع ہو جاؤ

بریگیڈیر صاحب آتے ہی ہونگے