بھارتی ڈیزائنر کا آسکر ٹرافی لوٹانے کا فیصلہ

آسکر ٹرافی تصویر کے کاپی رائٹ A.M.P.A.S.
Image caption ' گاندھی' فلم کے لیے بھارت کو پہلا آسکر ملا تھا

بھارت کی پہلی آسکر انعام یافتہ اور سنیما کی دنیا کی مقبول ترین کوسٹیوم ڈیزائنر بھانو اتھیا نے اپنی آسکر ٹرافی واپس لوٹانے کی خواہش ظاہر کی ہے۔

ہندوستانی سنیما کی دنیا میں پچاس سال سے زائد عرصے تک ایک کوسٹیوم ڈیزائنر کی حیثیت سے کام کرنے والی بھانو اتھیا چاہتی ہیں کہ ان کی آسکر ٹرافی ’محفوظ ہاتھوں میں رہے۔‘

بی بی سی سے بات کرتے ہوئے انہوں نے کہا ’سب سے بڑا سوال ٹرافی کی حفاظت کا ہے۔ بھارت میں پہلے کئی ٹرافیاں غائب ہوئی ہیں۔ میں اتنے سالوں تک اس ٹرافی سے لطف اندوز ہوئی ہوں اور چاہتی ہوں کہ یہ آگے بھی محفوظ رہے۔‘

انہوں نے مزید کہا ’میں اکثر آسکر اکیڈمی کے دفتر جاتی ہوں، میں نے دیکھا ہے کہ وہاں بہت سارے فن کاروں نے اپنی ٹرافیاں واپس کی ہیں۔‘

بھانو اتھیا کو کو سال انیس سو بیاسی میں ریلیز ہونے والی فلم ’گاندھی‘ میں کوسٹیوم ڈزائننگ کے لئے آسکر اعزاز سے نوازہ گیا ہے۔ اس فلم کو برطانوی ہدایتکار رچرڈ اوٹنبرو نے بنایا تھا۔

اس آسکر تقریب کو یاد کرتے ہوئے وہ کہتی ہیں ’سال انیس سو تراسی کی آسکر تقریب میں بیٹھے دوسرے ڈیزائنرز یہی کہہ رہے تھے کہ ایوارڈ مجھے ہی ملے گا۔ میں نے پوچھا کہ وہ ایسا اتنا یقین کے ساتھ کیسے کہ سکتے ہیں۔ اس پر ان کا کہنا تھا کہ فلم کا ’ کینوس‘ بہت وسیع ہے اور اس وہ مقابلہ نہیں کرسکتے ہیں۔‘

بھانو اتھیا کا ماننا ہے کہ اگر ان کی آسکر ٹرافی کو آسکر کے دفتر میں رکھا جائے گا تو بہت سارے لوگ اسے دیکھ پائیں گے۔

اسی بارے میں