سنجے گپتا کے خلاف جعلسازی کا مقدمہ

تصویر کے کاپی رائٹ PR
Image caption خط میں ممبئی پولیس جیسی مُہر کا بھی استعمال کیا گیا تھا۔

ممبئی پولیس نے بالی وڈ میں ایکشن فلمیں بنانے کے لیے مشہور ہدایتکار سنجے گپتا کے خلاف جعلسازی کا کیس درج کیا ہے۔

سنجے گپتا نے اپنی آنے والی فلم ’شوٹ آؤٹ ایٹ وڑالا‘ کی تشہیری پارٹی کا دعوت نامہ ممبئی پولیس کے لیٹر ہیڈ جیسے کاغذ پر چھپوايا تھا اور پولیس کی وردی میں ملبوس لوگوں کو اس دعوت نامے کو تقسیم کرنے کے لیے بھیجا تھا۔

اس دعوت نامے میں لکھا گیا تھا کہ ’پولیس کمشنر آپ کو محبوب سٹوڈيو پہنچنے کی درخواست کرتے ہیں۔ اس ملاقات میں پولیس کمشنر شہر میں منظم جرائم میں ہونے والے خطرناک اضافے کے بارے میں بات کریں گے‘۔

یہی نہیں بلکہ اس خط میں ممبئی پولیس جیسی مُہر کا بھی استعمال کیا گیا تھا۔

اس معاملے میں ممبئي پولیس نے دھوکہ دہی اور جعلسازي کی مختلف دفعات کے تحت ورسووا پولیس سٹیشن میں مقدمہ درج کیا گیا ہے۔

ورسووا پولیس سٹیشن کے سینیئر پولیس انسپکٹر ندكمار مہتر نے خبر رساں ایجنسی پی ٹی آئی کو بتایا، ’سنجے گپتا اور بالاجی ٹیلي فلمز کے خلاف فراڈ اور دھوکہ دہی کا معاملہ درج کیا ہے کیونکہ انہوں نے پولیس کمشنر کے ربڑ سٹمپ کا غلط استعمال کیا ہے‘۔

وہیں اس معاملے میں پولیس ایف آئی آر درج ہونے پر جب ہدایت کار سنجے گپتا سے بات کی گئی تو انہوں نے کہا، ’اگر آپ خط کو دیکھیں تو ہم نے ممبئی کا لفظ استعمال نہیں کیا ہے۔ مہر کا استعمال ایک مذاق تھا۔ ہمیں پتہ تھا کہ ہم ایسا کر رہے ہیں اور ہم نے تو خط کے پیچھے مطلع بھی کیا ہے‘۔

سنجے گپتا کی فلم ’شوٹ آؤٹ ایٹ وڑالا‘ پولیس مقابلے پر مبنی ہے۔ اس فلم میں جان ابراہم، انیل کپور اور تشار کپور سمیت نصف درجن فلمی ستارے کام کر رہے ہیں۔