وٹنی ہوسٹن کی موت نشے میں ڈوبنے سے ہوئی

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters

امریکی پاپ گلوکارہ وٹنی ہوسٹن کی موت کی تحقیقات کرنے والے حکام کے مطابق وٹنی ہوسٹن کی موت حادثاتی طور پر ڈوبنے کی وجے سے ہوئی تاہم منشیات کا استعمال اور دل کی بیماری بھی اس کی وجوہات میں شامل ہیں۔

تحقیقاتی ٹیم کے ترجمان کریگ ہاروے کے مطابق اڑتالیس سالہ وٹنی ہوسٹن کے لاش کے معائنے سے پتہ چلا ہے کہ وہ طویل عرصے سے کوکین کی عادی تھیں۔

اس بیان کے بعد وٹنی ہوسٹن کی موت کی وجوہات کے بارے میں جاری چہ مگوئیوں کا خاتمہ ہو گیا ہے ۔

رواں برس گیارہ فروری کو وٹنی ہوسٹن لاس اینجلس کے ایک ہوٹل کے کمرے میں اپنے باتھ ٹب میں مردہ پائی گئی تھیں۔ وٹنی کو اسی شام گریمی ایوارڈ میں شرکت کرنا تھی۔

تحقیاتی ادارے نے وٹنی ہوسٹن کو موت کو حادثہ قرار دیا ہے جس میں کسی دوسرے شخص کا کوئی ہاتھ نہیں ۔

وٹنی ہوسٹن کے خون میں پائی جانے والی منشیات میں ماریجوانا اور ڈپریشن کو دور کرنے، پر سکون ہونے اور اور الرجی دور کرنے والی ادوایات شامل ہیں۔

تاہم اس دن وٹنی ہوسٹن کی موت ان ادویات کے ضرورت سے زیادہ استعمال سے نہیں بلکہ نشے کی حالت پانی میں ڈوبنے کی وجہ سے ہوئی۔

وٹنی ہوسٹن کی رشتہ دار اور ان کی مینیجر نے تحقیقاتی رپورٹ کے بعد جاری بیان میں کہا، ’ ہم نشہ آور ادویات کے استعمال کے بارے میں جان کر دکھی ہیں لیکن ہمیں خوشی ہے کہ ان کی موت سے متعلق قیاس آرائیاں اب ختم ہوں گی اور اس معاملے کو بند کیا جائے گا۔‘

وٹنی ہوسٹن دنیا بھر میں مقبول ایک پاپ گلوکارہ تھیں جن کے کیریئر میں انیس سو اسّی سے انیس سو نوّے کے درمیان عروج آیا۔ گزشتہ کچھ سالوں سے وہ منشیات کی عادی تھیں۔

اسی بارے میں