پاکستان، بھارت مشترکہ فلمسازی کریں،سید نور

تصویر کے کاپی رائٹ BBC World Service

بھارت کے تعاون سے دوبئی میں بننےوالی فلمساز سید نور کی فلم ’میری شادی کراؤ‘ نمائش کے لیے تیار ہے۔

بھارتی فلموں کی پاکستان میں پذیرائی کے مخالف سید نور کا کہنا ہے کہ ان کی نئی فلم میری شادی کراؤ ایک رجحان ساز فلم ثابت ہوگی۔

لاہور سے نامہ نگار علی سلمان کے مطابق معروف فلم ساز سید نور اپنی نئی فلم میری شادی کراؤ کے پرنٹ لیکر ممبئی سے گذشتہ روز ہی پاکستان پہنچے ہیں۔

اس فلم کی پروسسنگ اور پرنٹنگ ممبئی میں ہوئی تھی۔ ’میری شادی کراؤ‘ نامی اس فلم میں دلیر مہدی کے بیٹے ہیرو کے طور پر جلوہ افروز ہورہے ہیں جبکہ بہت سے پاکستانی سٹیج اداکاروں کو پہلی بار پردہ سیمیں پر نمودار ہونے کا موقع فراہم کیا گیا ہے۔

سید نور کاشمار پاکستانی فلمی صنعت کے ایسے افراد میں ہوتا ہے جو بھارتی فلموں کے مخالف سمجھے جاتے ہیں۔ بی بی سی کی جانب سے پوچھے گئے اس سوال پر کہ ایک طرف تو وہ بھارت کے مخالف ہیں اور دوسری طرف ان کی حالیہ فلم بھارتی فلم انڈسٹری ہی کے تعاون سے مکمل ہوئی ہے؟ سید نور کا کہنا تھا کہ وہ کبھی بھی بھارتی فلموں کی پاکستان میں نمائش کے خلاف نہیں رہے کیونکہ وہ اس بات سے بخوبی آگاہ ہیں کہ اگر سینماؤں میں بھارتی فلمیں نہیں چلیں گی تو سینما بند ہو جائیں گے لیکن وہ اُس امتیازی سلوک کے خلاف ہیں جو کہ پاکستان میں پاکستانی فلموں کے ساتھ روا رکھا جاتا ہے۔

بقول ان کے پاکستانی میڈیا میں اور سینماؤں میں بھارتی فلمیں دکھائی جاتی ہیں اور انہیں فروغ دیا جاتا ہے لیکن پاکستانی فلموں کو بالکل اہمیت نہیں دی جاتی۔ انہوں نے کہا کہ اس مسئلے کا بہترین حل یہ ہے کہ دونوں ممالک مشترکہ فلم سازی کریں تاکہ پاکستانی فنکار ہندوستان جا کر اور ہندوستانی فنکار پاکستان آ کر کام کریں۔

سید نور نے کہا کہ ان کی آنے والی فلم بھی چوڑیاں کی طرح رجحان ساز ثابت ہوگی اور فلمی کہانیوں میں ایک بار پھر کامیڈی کا بول بالا ہوگا۔ سید نور نے جمعہ کو لاہور میں ایک پریس کانفرنس میں اپنی ایک اور نئی پنجابی فلم ’شریکا‘ شروع کرنے کا بھی اعلان کیا ہے۔

سید نور کا شمار ان پاکستانی فلم سازوں میں ہوتا ہے جو پاکستانی فلموں کے زوال کے اس دور میں بھی فلمیں بنا رہے ہیں اور ان کی بیشتر فلمیں عوام میں مقبولیت کا درجہ بھی حاصل کررہی ہیں۔

سید نور نے بتایاکہ ان کی نئی پنجابی فلم کی شوٹنگ ایک دو روز میں شروع ہوکر ڈیڑھ مہینے میں ختم ہوجائے گی اور عید پر یہ فلم بھی نمائش کے لیے پیش کردی جائے گی۔

سید نور نے کہا کہ وہ بہت جلد پاکستان کی پہلی تھری ڈی فلم بنانے کا اعلان بھی کریں گے۔

اسی بارے میں