’بھگوان مہدی حسن کی آواز میں بولتا تھا‘

تصویر کے کاپی رائٹ BBC World Service

دنیائے غزل کے مشہور پاکستانی گلوکار مہدی حسن کے انتقال پر بھارتی شوبز کی نامور شخصیات نے بھارتی ذرائع ابلاغ سے بات کرتے ہوئے انتہائی غم کا اظہار کیا ہے۔

ممتاز گلوکارہ لتا منگیشکر کا کہنا ہے کہ انہیں لگتا ہے کہ ’ایشور‘ یعنی بھگوان مہدی حسن کی آواز میں بولتا تھا۔ ان کی گلوکاری سے یہ صاف ہوتا تھا کہ انہیں کلاسیکل موسیقی میں مہارت حاصل ہے اور وہ اپنی غزلوں کو اپنے انداز میں عوام تک پہنچاتے تھے اور یہ ان کی بڑی خوبی تھی کہ وہ مشکل غزل کو آسان بنا کر پیش کرتے تھے۔

لتا کی طرح غزل گلوکار پنکج ادھاس نے مہدی حسن کے انتقال پر افسوس کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ انہوں نے جب پہلی بار مہدی صاحب کو سنا تو ان پر جیسے جادو ہوگیا تھا۔

’ان دنوں مہدی صاحب کی کیسٹس مشکل سے ملتی تھیں لیکن میں نے بڑی مشکل سے ان کی کیسٹس خریدی اور انہیں سنا اور جب بھی میں انہیں سنتا تھا ہر بار مجھے ان کی غزل میں نئی چیز سننے کو ملتی تھی۔ میں ان کا مُرید ہوں۔ ان کی موت گلوکاری کے لیے ایک بڑا نقصان ہے۔‘

بالی وڈ کے معروف اداکار انوپم کھیر کے مطابق مہدی حسن ان کے پسندیدہ گلوکار تھے۔

تصویر کے کاپی رائٹ BBC World Service
Image caption لتا منگیشکر کا کہنا ہے کہ مہدی حسن مشکل غزل کو بھی آسان بنا کر پیش کرتے تھے۔

’مجھے یاد ہے کہ میں نے کراچی کے ایک کالج میں گیٹ پھلانگ کر کے ان کی غزل سنی تھی۔‘

اسی طرح صوفی گلوکار ضلع خان کا کہنا ہے کہ انہیں بھارتی ہونے کے ناتے اس بات پر فخر ہے کے ہم نے سرحد پار کے سنگرز کو یہاں آنے کا موقع دیا اور ہم سب نے ان کو سنا اور لطف اندوز ہوئے۔ میرے لیے مہدی حسن تو عظیم ہیں ’واہ کیا آواز، کیا جادو۔‘

ہدایت کار مدھر بھنڈارکر کا کہنا ہے کہ وہ مہدی حسن کے لیے دعا کرتے ہیں کہ ان کو جنت حاصل ہو۔

’ آپ کی غزلیں ہمارے ساتھ رہیں گی اور ہم ہمیشہ آپ کے شکرگزار رہے گیں آپ کی غزلوں کے لیے۔‘

اسی بارے میں