چالیس آڈیشن کے بعد ملی ’فراری کی سواری‘

شرمن جوشی تصویر کے کاپی رائٹ pr
Image caption شرمن جوشی ’تھری ایڈیٹس ‘ اور ’فراری کی سواری‘ کو اپنی زندگی کی بہت اہم فلمیں مانتے ہیں۔

صبر کا پھل میٹھا ہوتا ہے یہ کافی مشہور مثال ہے لیکن یہ بات فلم اداکار شرمن جوشی پر صحیح ثابت ہوئی ہے۔

شرمن جوشی تیرہ سال سے بالی ووڈ میں ہیں لیکن فلم میں تنہا ہیرو کے طور پر انہیں ابھی تک کوئی رول نہیں ملا تھا لیکن اسی ہفتے رلیز ہونے والی فلم ’فراری کی سواری‘ میں ان کی یہ خواہش بھی پوری ہو گئی۔

اس فلم کے ہدایت کار ودو ونود چوپڑہ ہیں جنہوں نے فلم ’تھری ایڈیٹ‘ بنائی تھی جس میں شرمن جوشی بھی تھے لیکن پھر بھی فلم ’فراری کی سواری‘ کے لیے انہیں بہت پاپڑ بیلنے پڑے۔

فلم میں لیڈ رول حاصل کرنے کے لیے شرمن نے چالیس آڈیشن دیے۔

شرمن جوشی نے 1999 میں فلم ’گاڈ مدر ‘ کے ساتھ اپنی فلمی زندگی کا آغاز کیا تھا پھر انہیں لیڈ رول حاصل کرنے میں اتنا وقت کیوں لگا بی بی سی کے اس سوال کا جواب دیتے ہوئے شرمن نے کہا کہ ’میں تو لمبی ریس کا گھوڑا ہوں ہاں اس بات کا وعدہ کرتا ہوں کہ جو بھی فلم کروں گا وہ ایک اچھی فلم ہوگی اور آپ کا وقت اور پیسہ دونوں وصول ہونگے‘۔

شرمن کا کہنا ہے کہ اگر اپنی زندگی میں انہوں نے کم سے کم دس اچھی فلمیں کر لیں تو انہیں خود پر بہت فخر ہوگا۔

شرمن جوشی ’تھری ایڈیٹس ‘ اور ’فراری کی سواری‘ کو اپنی زندگی کی بہت اہم فلمیں مانتے ہیں۔

اسی بارے میں