ایملی ڈکنسن کی نایاب تصویر کا انکشاف

آخری وقت اشاعت:  جمعـء 7 ستمبر 2012 ,‭ 00:05 GMT 05:05 PST
ایملی ڈکنسن

ایملی ڈکنسن (بائیں) اس تصویر میں نہایت پراعتماد نظر آتی ہیں

انیسویں صدی کی شہرہ آفاق امریکی شاعرہ ایملی ڈکنسن کی اب تک صرف ایک ہی تصویر موجود تھی۔ لیکن اب امریکی ریاست میساچیوسٹس میں ان کے آبائی قصبے ایمہرسٹ کے کالج نے اعلان کیا ہے کہ اس شاعرہ کی ایک اور تصویر بھی دریافت ہوئی ہے۔

اس تصویر کے وقت ایملی کی عمر انتیس برس تھی۔

ایملی ڈکنسن کو انگریزی زبان کی سب سے بڑی شاعرہ تسلیم کیا جاتا ہے۔ یہی نہیں بلکہ وہ ایک ایسی شاعرہ بھی ہیں جنہوں نے انیسویں صدی میں ایسی جدید شاعری کی جو موضوعات کے برتاؤ اور ہیئت کے تجربات کے لحاظ سے بیسویں صدی کی شاعری معلوم ہوتی ہے۔

کالج کی ویب سائٹ پر دی جانے والی خبر کے مطابق یہ تصویر ایک امریکی مداح نے انیس سو پچانوے میں نیلام سے خریدی تھی۔ اس نے ایک عشرے سے بھی زیادہ وقت لگا کر بالآخر تصویر میں موجود ایملی ڈکنسن کو شناخت کر لیا۔ یہی نہیں بلکہ اس نے تصویر کے اندر موجود دوسری خاتون کا بھی کھوج لگا لیا۔ یہ ایملی کی دوست کیٹ ٹرنر ہے۔

اس سے قبل ایملی کی صرف ایک ہی تصویر دستیاب تھی جو اس وقت کھینچی گئی تھی جب ان کی عمر سترہ برس تھی۔

اس تصویر کو ریاست نیویارک کی ہسٹوریکل ایسوسی ایشن کے میوزیم میں نمائش کے لیے رکھا گیا ہے۔

یہ تصویر ڈیگیرو ٹائپ نامی کیمرے سے اٹھارہ سو انسٹھ میں لی گئی تھی۔ اس کیمرے میں فلم کی بجائے چاندی کا ملمع لگی تانبے کی پلیٹ پر نقش اتارا جاتا تھا۔

ایملی ڈکنسن

ایملی ڈکنسن کی اب تک موجود واحد تصویر

اس بات کا کیا ثبوت ہے کہ یہ تصویر ایملی ہی کی ہے؟

اس بات کو پرکھنے کے لیے ریاست ہیمپشائر کے ڈارٹ متھ ہچکاک میڈیکل سنٹر کی ڈائرکٹر آف نیورو آفتھلمالوجی ڈاکٹر سوزن پیپن نے دونوں تصویروں میں موجود خواتین کی آنکھوں کی پتلیوں کا تفصیلی جائزہ لیا۔ جس کے بعد انہوں نے ایک تحریری بیان میں اعلان کیا:

’اٹھارہ سو سینتالیس اور اٹھارہ سو انسٹھ کی تصاویر میں موجود خواتین کے چہروں کے خدوخال کا تقابل کرنے کے بعد مجھے یقین ہے کہ یہ دونوں تصاویر ایک ہی خاتون کی ہیں۔‘

کالج کی ویب سائٹ پر کہا گیا ہے کہ ایک اور بات جو بہت کام آئی وہ یہ تھی کہ یہ بات معلوم ہے کہ کیٹ ٹرنر ایملی کی گہری دوست تھی اور کیٹ کی متعدد تصاویر موجود ہیں، اس لیے اس کی شناخت زیادہ بڑا مسئلہ نہیں تھی۔ اس کے بعد یہ قیاس کرنا مشکل نہیں تھا کہ کیٹ کے ساتھ جو خاتون بیٹھی ہوئی ہے اور جو ایملی کی طرح نظر آتی ہے وہ ایملی ہی ہے۔

ایملی ڈکنسن کو عام طور پر ایک گوشہ گزین اور غم زدہ شاعرہ کے روپ میں پیش کیا جاتا ہے جو اپنے گھر سے کم ہی باہر نکلتی تھی۔ لیکن اس نئی تصویر میں جو خاتون موجود ہے وہ توانائی اور زندگی سے بھرپور ہے نظر آتی ہے۔

"اٹھارہ سو سینتالیس اور اٹھارہ سو انسٹھ کی تصاویر میں موجود خواتین کے چہروں کے خدوخال کا تقابل کرنے کے بعد مجھے یقین ہے کہ یہ دونوں تصاویر ایک ہی خاتون کی ہیں۔"

اس کے ہاتھوں کا انداز، نشست، سیدھی کمر، اور اونچا سر ایک ایسی شخصیت کی غمازی کرتے ہیں جسے اپنے آپ پر مکمل اعتماد ہو اور جسے دنیا کی آنکھوں میں آنکھیں ڈال کر دیکھنا آتا ہو۔

ایملی کے مداح ان کی اس نئی تصویر میں انہیں پہچان کر حیران ہونے کے ساتھ ساتھ خوش بھی ہو رہے ہیں۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔