شاہ رُخ: کشمیر کا نشہ کبھی نہ اُترےگا

آخری وقت اشاعت:  جمعرات 6 ستمبر 2012 ,‭ 11:26 GMT 16:26 PST
شاہ رخ خان

شاہ رخ گزشتہ کچھ ہفتوں سے کشمیر میں اپنی نئی فلم کی شوٹنگ کررہے تھے

’میرے والد سچ کہتے تھے کہ بیٹا کشمیر ایک بار جاؤ گے، تو زندگی بھر کشمیر تہمارے اندر رہے گا۔‘ یہ جذباتی فقرہ بالی وڈ کے ممتاز ستارہ شاہ رُخ خان نے کشمیر میں یش راج چوپڑہ کی ایک نئی فلم کی شوٹنگ سمیٹنے پر ممبئی واپسی پر کہا۔ انہوں نے اعتراف کیا کہ کشمیر کی فضاؤں نے ان کے مزاج میں انقلاب پیدا کیا ہے۔

کلِک شاہ رخ خان کی تصاویر

'میں جب پہلگام سے گلمرگ کی طرف ہیلی کاپٹر میں نکل پڑا تو مجھے ان فضاؤں میں ایک اثر محسوس ہوا۔ پچھلے تیس سال سے میں دنیا گھوم رہا ہوں، کبھی یہ نہ لگا کہ کسی جگہ کا ماحول کسی شخص کے مزاج اور برتاؤ میں تبدیلی لاسکتا ہے۔‘

سوالات کی بوچھاڑ اور مداحوں کے ہجوم کے بیچ شاہ رُخ بالکل منکسرالمزاج معلوم ہوئے۔ کئی محافظوں کی موجودگی میں وہ خود اُٹھے اور ہجوم کو بیٹھنے کی ترغیب دی، ہر سوال کا جواب دیا ، یہاں تک انتہائی ذاتی سوالات کا بھی بہت حاضرجوابی کے ساتھ مقابلہ کیا۔

"دیکھئیے میں یہاں کی سیاست، نظریات یا جغرافیہ پر تحقیق کرنے نہیں بلکہ یہان کی دلکش فضاؤں میں کام کرنے آیا ہوں۔ یہاں کے حالات پر میں بات کرونگا تو مجھے ڈر ہے میری ناقص معلومات کی وجہ وہ جواب معتبر نہیں ہوگا"

شاہ رخ خان

ان سے پوچھا گیا کہ بالی وڈ کی فلموں میں کشمیر کی من پسند تصویر پیش کی جاتی ہے اور یہاں موجود فوج سے درپیش مشکلات، گمنام قبروں یا متاثرین کی آواز کہیں نہیں ہوتی۔ اس کے جواب میں شاہ رُخ نے کہا’ کہانی جہاں بھی ہو بالی وڈ اس کو دوسروں تک پہنچاتا ہے۔ اگر آپ سمجھتے ہیں کہ یہ سینیما آپ کی کہانی اس طرح سے کہتا جیسا آپ کہنا چاہتے ہیں، تو آپ خود اس کہانی کو پیش کیجئیے۔ لیکن کہانی کہنے والے پر آپ اپنی پسند تھوپ نہیں سکتے۔‘

کشمیر سے متعلق کافی اصرار کے باوجود شاہ رُخ نے ڈپلومیٹک جوابات ہی دئے۔ 'دیکھیے میں یہاں کی سیاست، نظریات یا جغرافیہ پر تحقیق کرنے نہیں بلکہ یہاں کی دلکش فضاؤں میں کام کرنے آیا ہوں۔ یہاں کے حالات پر میں بات کرونگا تو مجھے ڈر ہے میری ناقص معلومات کی وجہ وہ جواب معتبر نہیں ہوگا۔‘

کشمیر کے اپنے پہلے دورے کے اختتام پر مداحوں اور نامہ نگاروں سے خطاب کے دوران انہوں نے کہا کہ ان کی پردادی کشمیر سے تھیں۔ تاہم وہ کسی جگہ کا نام بتا نہ سکے۔

شاہ رُخ خان نے ایک ہفتے تک لداخ، گلمرگ، پہلگام اور سرینگر کی جھیل ڈل میں قطرینہ اور انوشکا شرما کے ہمراہ فی الحال بغیر عنوان کے اس فلم کی شوٹنگ کی۔ اس دوران یہاں کے کئی وزراء اور بڑے افسروں نے اپنے بیوی بچوں سمیت شاہ رُخ سے ملاقات کی کوشش کی، لیکن وہ کسی سے نہیں ملے۔ اس کی وجہ پوچھے جانے پر انہوں نے کہا: ’میں ایک عام آدمی ہوں، کام کے وقت کام کرتا ہوں۔ کسی کو تکلیف پہنچی ہو میں معذرت خواہ ہوں۔‘

واضح رہے یش راج چوپڑا نے پچیس برس بعد دوبارہ کشمیر کا رُخ کیا ہے۔

اُنیس سو ساٹھ، ستّر اور اسی کی دہائیوں میں بالی ووڑ کی اکثر فلموں میں کشمیر کی ہی منظرکشی ہوتی تھی۔ اُنیس سو نواسی میں مسلح شورش شروع ہوتے ہی بالی ووڑ نے کشمیر کا سفر ترک کیا اور اس طرح بھارتی سیمینا نے یورپ، امریکہ دوسرے مقامات کا رُخ کیا۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔