دلیپ کی کہانی بیگم کی زبانی

آخری وقت اشاعت:  منگل 11 دسمبر 2012 ,‭ 11:44 GMT 16:44 PST

بھارتی سنیما میں شہنشاہِ جذبات کے نام سے معروف ہر دلعزیز اداکار دلیپ کمار منگل کو نوے سال کے ہوگئے ہیں۔ اس موقع پر ان کی اہلیہ اور اپنے زمانے کی معروف اداکارہ سائرہ بانو انہیں کچھ یوں یاد کرتی ہیں۔ سائرہ بانو کی باتیں انہیں کی زبانی۔

ساری دنیا میں دلیپ کمار کو جو پیار ملا ہے ان کی یوم پیدائش کے حوالے سے جو جوش ان کے مداحوں میں ہے، اسے محسوس کر کے ہم بے انتہا خوشی محسوس کرتے ہیں اور ہمارا دل باغ باغ ہوتا ہے۔

نہ صرف بھارت اور پاکستان بلکہ لاس اینجلس جیسی جگہوں پر بھی ان کے یوم پیدائش کی تقریبات بڑے اہتمام سے منائی جا رہی ہیں۔

دلیپ اور میں اپنے مداحوں اس پیمانے پر محبت پا کر بہت خوش ہیں۔

گزشتہ سال یش چوپڑا جی دلیپ کی سالگرہ پر آئے تھے انہوں نے صاحب (دلیپ کمار) کے ساتھ مل کر ان کی سالگرہ کا کیک کاٹا تھا۔ وہ اس سال ہمارے درمیان نہیں ہیں۔ اس کے علاوہ راجیش کھنہ بھی ہمیں چھوڑ کر جا چکے ہیں۔ اس لیے اس سال ہم سالگرہ انتہائی سادہ طریقے سے منا رہے ہیں۔

ہمیں پوری فلم انڈسٹری سے پیار ملتا رہا ہے، بطور خاص بچن خاندان سے تو ہمارے بڑے اچھے تعلقات ہیں۔ اس سال جب میں اور دلیپ امیت جی کی یوم پیدائش پر ان کے یہاں گئے تو ابھیشیک، ایشوریا باہر تک دوڑے چلے آئے اور صاحب کا ہاتھ پکڑ کر اندر لے گئے۔

امیتابھ جی خود اتنے عمدہ اداکار ہیں لیکن وہ ہر جگہ بس دلیپ کی ہی باتیں کرتے رہتے ہیں۔ہم ان کے شکرگزار ہیں کہ وہ صاحب کے تعلق سے اپنی دیوانگی کا ہمیشہ اظہار کرتے رہتے ہیں۔

دلیپ کمار امیتابھ بچن

امیتابھ بچن دلپ کمار کو اداکاری کا ادارہ مانتے ہیں۔

دلیپ عامرخان، شاہ رخ اور سلمان تینوں کو بہت پسند کرتے ہیں۔ سلمان کی دبنگ انہیں کافی پسند آئی اور وہ شاہ رخ کی شوخی اور زندہ دلی کے قائل ہیں۔

عامر خان بہت سوچ سمجھ کر فلم کا انتخاب کرتے ہیں اور اس تعلق سے وہ صاحب کو خود اپنے جیسے لگتے ہیں، کیونکہ دلیپ جی خود بھی بہت غور وخوض کے بعد فلم میں اداکاری کے لیے ہامی بھرتے تھے۔ عامر خان کی ’تھری اڈيئٹس‘ انہیں بہت پسند آئی۔

یہ تینوں لڑکے بھی صاحب سے بے انتہا لگاؤ رکھتے ہیں۔ جب بھی صاحب سے کسی پارٹی میں ملاقات ہوتی ہے، تو سارے مہمانوں کو چھوڑ کر یہ لوگ ان کے پاس چلے آتے ہیں۔ ان سے بڑے پیار سے باتیں کرتے ہیں، ان کا ہاتھ پکڑ کر کار تک چھوڑنے آتے ہیں۔

ہماری خود کی کوئی اولاد نہیں ہے لیکن موجودہ دور کے یہ بچے ہمیں خود اپنے بچوں جیسے لگتے ہیں۔

’ویسے تو صاحب کی دیوآنند اور راج کپور دونوں سے دوستی تھی۔ لیکن راج کپور کے ساتھ ان کے بڑے قریبی تعلقات رہے۔ دونوں ہی پاکستان کے پشاور شہر میں ایک ہی محلے، ایک ہی سڑک کے رہنے والے تھے۔ بالکل بھائیوں جیسا رشتہ تھا ان کا۔‘

دیو کچھ مختلف قسم کے شخص تھے، لیکن ان کے ساتھ بھی صاحب نے بڑی دوستی نبھائی۔

عامر اور سلمان کے ساتھ

عامر، شاہ رخ اور سلمان تینوں دلیپ کمار کے پرستار ہیں۔

ایک بار دیوآنند اپنی فلم ’ہرے راما ہرے کرشنا‘ کی شوٹنگ کے سلسلے میں اداکارہ ممتاز کے ساتھ نیپال جا رہے تھے تب کسی گروہ نے کچھ مشکلات کھڑی کر دی اور اعلان کیا کہ وہ اس فلم کی شوٹنگ نہیں ہونے دیں گے۔

وہ لوگ دیو کو روکنے ہوائی اڈے تک پہنچ گئے تب صاحب ہوائی اڈے گئے اور دیو کی حفاظت میں وہاں کھڑے رہے تب کہیں جا کر دیو صحیح سلامت کھٹمنڈو روانہ ہو سکے۔

اسی طرح جب سنجے دت نوے کی دہائی میں قانونی مشکلات سے دو چار ہوئے تھے تب سنیل دت کو دلیپ جی نے بڑا سہارا دیا، وہ سنیل دت کے ساتھ رات رات بھر جاگتے رہتے اور اس مسئلے کا حل تلاش کرنے کی کوشش کرتے۔

معدودے چند لوگوں کو یہ معلوم ہے کہ دلیپ جی بہترین آملیٹ بناتے ہیں اور وہ طرح طرح کے آملیٹ بنا کر مجھے کھلاتے رہتے ہیں۔

وہ بہترین ستار بجاتے ہیں اور بہت اچھا گاتے بھی ہیں۔ اس کے علاوہ وہ بیڈمنٹن چیمپیئن بھی رہ چکے ہیں۔

انہیں سیر پر جانا بڑا اچھا لگتا ہے اور آج بھی ہفتے میں چار پانچ دن ہم سیر پر جاتے ہیں۔

دلیپ کمار

دلیپ کمار کی فلموں میں مغل اعظم، دیوداس، داغ، انداز، گنگا جمنا، رام اور شیام وغیرہ یادگار ہیں۔

صاحب بڑے سادہ قسم کے شخص ہیں اور ہم ٹی وی پر پرانی فلمیں دیکھنا پسند کرتے ہیں۔

انہیں شور شرابہ اور پارٹی وغیرہ زیادہ پسند نہیں ہے وہ کئی بار سکون کے لیے شہر سے دور کسی ڈاک بنگلے میں جا کر چھٹیاں گزارنا پسند کرتے تھے۔

صاحب کو پوری دنیا میں جو بے انتہا پیار ملا ہے، ہر کسی کا ان سے لگاؤ ہے وہ اس سے بہت خوش ہوتے ہیں لیکن اپنی خوشی کا بہت زیادہ اظہار نہیں کرتے، بس ان کی ایک مسکراہٹ ہی کافی ہے۔ ان کی اس ملین ڈالر سمائل پر میں نچھاور ہو جاتی ہوں۔

اوپر والے کا رحم ہے کہ اس نے ہمیں اتنا پیار اتنی عزت بخشی۔ ہماری یہی تمنا ہے کہ صاحب صحت مند رہیں اور اپنی موجودگی سے ہم سب میں توانائی بھرتے رہیں۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔