مڈنائٹس چلڈرن بھارتی سنسر نے پاس کر دی

آخری وقت اشاعت:  ہفتہ 15 دسمبر 2012 ,‭ 22:54 GMT 03:54 PST
فلم مڈنائٹس چلڈرن

کینیڈا میں مقیم بھارتی نژاد فلم ساز دیپا مہتا نے کہا ہے کہ بھارتی سنسر بورڈ نے سلمان رشدی کے ناول ’مڈ نائٹس چلڈرن‘ پر مبنی ان کی فلم کو بغیر کسی کاٹ چھانٹ کے پاس کر دیا ہے۔

مہتا نے سماجی رابطے کی سائٹ ٹوئٹر پر لکھا ہے کہ ’بھارت سے ہم سالم لوٹ آئے۔ یہ خبر زبردست ہے۔۔۔ مڈ نائٹس چلڈرن کی بھارتی سنسر بورڈ نے ایک بھی تصویر نہیں کاٹی۔ سلمان رشدی اور ہم بہت خوش ہیں‘۔

یہ فلم آئندہ سال کے شروع میں بھارت میں ریلیز ہو رہی ہے جبکہ اس کی رونمائی جنوبی بھارتی ریاست کیرالہ کے بین الاقوامی فلم فیسٹیول میں بھی کی گئی تھی۔

اس فلم کے حوالے سے ایسے خدشات ظاہر کیے جا رہے تھے کہ اسے بھارت میں ریلیز نہیں ہونے دیا جائے گا کیونکہ اس میں بھارت کی سابق وزیر اعظم اندرا گاندھی پر نکتہ چینی کی گئی ہے۔

لیکن بعد میں بڑے بھارتی سینما گھروں کے سلسلے میں سے ایک پی وی آر پکچرز نے بھارت میں اس کی ریلیز کا حق خرید لیا۔

واضح رہے کہ مہتا اور سلمان رشدی دونوں بھارت میں متنازع شخصیات میں شامل ہیں۔

مڈ نائٹس چلڈرن

مڈ نائٹس چلڈرن چھ سو صفحات پر مشتمل سلمان رشدی کا ناول ہے۔

مصنف کی انیس سو اٹھاسی میں شائع ہونے والی کتاب ’دی سیٹنک ور‎سز‘ پر بھارت میں پابندی عائد ہے۔ اس سال جنوری میں موت کی دھمکی کی خبروں کے بعد وہ جےپور لٹریچر فیسٹیول میں شامل نہ ہو سکے تھے۔

انھیں ویڈیو لنک کے ذریعے اپنے خطاب سے بھی باز رہنا پڑا کیونکہ مظاہرین نے دھمکی دی تھی کہ اگر یہ خطاب ہوا تو وہ اس جگہ مظاہرہ کریں گے۔

اسی طرح دیپا مہتا کو شمالی بھارت کے شہر وارانسی یا بنارس میں ان کی فلم ’واٹر‘ کے لیے شوٹنگ کرنے کی اجازت نہیں دی گئی تھی۔

اس کے بعد انھوں نے اس فلم کی شوٹنگ سری لنکا میں کی جہاں ’مڈ نائٹس چلڈرن‘ کی بھی شوٹنگ کی گئی ہے۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔