بھارتی گلوکارہ آسکرز کی دوڑ میں شامل

آخری وقت اشاعت:  جمعـء 11 جنوری 2013 ,‭ 09:41 GMT 14:41 PST
جے شری

جے شری کرناٹک موسیقی کی ماہر ہیں

اکیڈمی آف موشن پکچرز، آرٹس اینڈ سائنسز نے سنہ دو ہزار تیرہ کے آسکرز ایوارڈز کے لیے جن نامزدگیوں کا اعلان کیا ہے ان میں ایک بھارتی گلوکارہ کا نام بھی شامل ہے۔

بھارتی کرناٹک موسیقی کی گلوکارہ بامبے جے شری کو ’بیسٹ اوریجنل سانگ‘ کے زمرے میں مائیکل ڈانا کے ساتھ نامزدگی ملی ہے۔

جے شری کو جس نغمے کے لیے نامزد کیا گیا ہے وہ حال ہی ریلیز ہوئی فلم ’لائف آف پائی‘ میں ان کی تمل زبان میں گائی ہوئی ایک لوری ہے جو انہوں نے خود ہی لکھی اور گائی ہے۔

اس برس آسکرز میں ’لائف آف پائی‘ کو گیارہ نامزدگیاں حاصل ہوئی ہیں۔

’لائف آف پائی‘ کا آغاز اس لوری سے ہی ہوتا ہے اور اسی پر فلم ختم بھی ہوتی ہے۔

بی بی سی سے بات کرتے ہوئے جے شری نے بتایا ’آنگ لی نے میری موسیقی کی ایک آڈیو سی ڈی سنی تھی اور مجھ سے بات چیت کرنے کے بعد مجھے یہ لوری گانے کی پیش کش کی تھی‘۔

اپنی ویب سائٹ پر جے شری نے لکھا ہے ’جب یہ گانا لکھنے کے لیے آنگ لی میرے پاس آئے تو انہوں نے مجھ سے کہا کہ ایک بچہ اس لیے نہیں سوتا ہے کہ اسے نیند آرہی ہے بلکہ اس لیے سوتا ہے کہ وہ محفوظ محسوس کرتا ہے۔ ان کے ساتھ کام کرنا ایک بہترین تجربہ تھا۔‘

آسکر اعزاز کے لیے جے شری کی نامزدگی کی خبر آنے کے بعد بھارت کے پہلے آسکر ایوارڈ یافتہ موسیقار اے آر رحمان نے ٹویٹ کیا ’ کسی تمل نغمے کو پہلی بار آسکر کے لیے نامزد کیے جانے پر جے شری کو مبارکباد۔‘

’ لائف آف پائی‘ کی کہانی کا ایک بڑا حصہ بھارت کے بارے میں ہے۔ یہ کہانی ایک بھارتی خاندان سے شروع ہوتی ہے اور ایک بھارتی لڑکے کے سمندر میں ایک شیر کے ساتھ گزارے دو سو ستائیس دنوں کو دکھاتی ہے۔

اس لڑکے کا کردار دلی یونیورسٹی کے ایک طالب علم سورج شرما نے ادا کیا ہے۔ ان کے علاوہ عرفان خان، تبو اور عادل حسین نے فلم میں اہم کردار ادا کیے ہیں۔فلم کے ایک بڑے حصے کی شوٹنگ جنوبی بھارت کے منار اور پونڈی چری سمیت کئی مقامات پر کی گئی ہے۔

یہ فلم بھارت میں بے حد مقبول ہوئی ہے اور یہاں اس نے نوے کروڑ روپے کا کاروبار کیا ہے۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔