اٹلی کے مفرور پاپا راتسی کی تلاش

آخری وقت اشاعت:  منگل 22 جنوری 2013 ,‭ 01:20 GMT 06:20 PST

کرونا سزا ملنے سے پہلے روپوش ہو گئے ہیں اور اب ان کی تلاش جاری ہے

یورپ بھر میں اٹلی کے سب سے معروف ’پاپا راتسی‘ فوٹو گرافر فابرزیو کرونا کی گرفتاری کے وارنٹ جاری کر دیے گئے ہیں۔

جمعہ کو فوٹو گرافر کرونا اس وقت روپوش ہو گئے تھے جب ایک عدالت نے بلیک میلنگ یعنی دھمکی دے کر رقم وصول کرنے کے الزام کے مقدمے میں انہیں مجرم قرار دیا تھا۔

کرونا کو سابق بین الاقوامی فٹبال کھلاڑی ڈیوڈ تریزگویت کو ان کی ممکنہ طور پر شرمناک تصاویر کی واپسی کے عوض رقم کا مطالبہ کرنے کے الزام میں قصور وار ٹھہرایا گیا تھا۔

عدالت نے فوٹو گرافر فابرزیو کرونا کو پانچ سال قید کی سزاء سنائی تھی تاہم اب سزائے قید میں اضافہ ہو گیا ہے۔

کلِک Paparazzi کون لوگ ہیں؟

اٹلی کی نیوز ایجنسی آنسا کے مطابق قانون سے بھاگنے کے جرم میں اب کرونا کو دو سال اور دس ماہ کی اضافی قید کی سزا کاٹنی ہو گی۔

نیوز ایجنسی کے مطابق میلان انٹرپول موبائل سکواڈ اس ہائی پرفائل مفرور کی تلاش کے عمل کی قیادت کر رہا ہے۔

روم میں بی بی سی کے نامہ نگار ایلن جونسٹن کا کہنا ہے کہ اپنی فوٹو ایجنسی کے بعد وہ مشہور شخصیات کے کلچر کی ایک نمایاں شخصیت بن گئے تھے جو سابق وزیر اعظم اور میڈیا کے ایک بڑے حصے کے مالک سلویو برلسکونی کے گرد گھومتی تھی۔

انہیں اس سے پہلے سال دو ہزار سات میں بھی بھتہ خوری کے معاملے میں قصروار ٹھہرایا گیا تھا۔

کرونا پر الزام ہے کہ انہوں نے فٹبالر کی طرح دیگر مشہور شخصیات کو اپنا نشانہ بنایا اور ان میں سابق وزیراعظم برسلکونی کے خاندان کے افراد بھی شامل ہیں۔

کرونا کا کہنا ہے کہ انہوں نے کبھی کسی کو بلیک میل نہیں کیا اور وہ صرف مشہور شخصیات کو شرمناک تصاویر شائع ہونے سے پہلے خریدنے کا ایک موقع دیتے تھے۔

ان کا کہنا ہے کہ وہ ان تصاویر کا اتنا ہی معاوضہ طلب کرتے تھے جتنا کہ کوئی میگزین ادا کرتا۔

خیال رہے کہ Paparazzi فوٹو گرافر سیاست، کھیل، فلم یا کسی بھی شعبے میں شہرت رکھنے والی شخصیات کا پیچھا کرتے ہیں اور اُن کی روزمرہ زندگی کے ایسے حقائق کو کیمرے کی زد میں لانے کی کوشش کرتے ہیں جو دیکھنے والوں کے لے انتہائی سنسنی خیز ثابت ہوں۔

Paparazzi فوٹو گرافر شوبِز کی دنیا میں خاص طور پر بدنام ہیں کیونکہ اِن کے جاسوس کیمروں کی آنکھ دنیائے فن کے معروف ستاروں کے تعاقب میں رہتی ہے اور اُن شخصیات کے لئے تخلئیے میں ایک لمحہ گزارنا بھی مشکل ہو جاتا ہے

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔