ادبی فیسٹول: پاکستانی مصنفوں کے خلاف مظاہرے

آخری وقت اشاعت:  منگل 22 جنوری 2013 ,‭ 16:34 GMT 21:34 PST

بھارت کے شہر جے پور کا ادبی فیسٹول شروع ہونے سے پہلے ہی تنازعات کا شکار ہو گیا ہے۔

بھارتی جنتا پارٹی کے یوتھ ونگ کے ارکان نے پیر کو ایک مظاہرے میں اعلان کیا کہ وہ فیسٹول میں کسی بھی پاکستانی مصنف اور ادیب کو شرکت کی اجازت نہیں دیں گے۔

واضح رہے کہ اس سے پہلے جے پور میں ایک مسلمان گروپ نے ادبی فیسٹول کے دوران مصنفین کو سلمان رشدی کی کتاب سے اقتباس پڑھنے کی صورت میں تنبیہ کرتے ہوئے مظاہرے کی دھمکی دی تھی۔

دوسری جانب جے پور پولیس کمشنر بی ایل سونی نے کہا ہے کہ کسی کو بھی قانون توڑنے کا حق نہیں ہے۔

انہوں نے کہا ’ہم فیسٹول کے دوران امن کو یقینی بنائیں گے اور کسی کو امن خراب کرنے کی اجازت نہیں دی جائے گی‘۔

بھارتی جنتا پارٹی کے ’جنتا یوو مورچہ‘ نامی گروپ کے ارکان نے منگل کو اپنے نائب صدر لکشمی کانت بھردواج کی قیادت میں احتجاجی جلوس نکالا اور پاکستان کے خلاف نعرہ بازی کی۔

بھارتی جنتا پارٹی کے کارکن پولیس کمشنر کے دفتر کے قریب اکھٹے ہوئے اور نعرہ بازی کی۔ انہوں نے پولیس کو ایک یادداشت پیش کرتے ہوئے کہا کہ وہ جے پور ادبی فیسٹول میں کسی بھی پاکستانی ادیب کی شرکت کی مخالفت کریں گے۔

لکشمی کانت بھردواج کا کہنا تھا کہ ’ہم پاکستانی ادیبوں کو یہاں آنے اور ادبی فیسٹول میں شریک ہونے کی اجازت کس طرح دے سکتے ہیں جب پاکستانی فوج نے لائن آف کنٹرول پر ہمارے سپاہیوں کے سر قلم کیے‘۔

انہوں نے کہا ’ہم فیسٹول کے خلاف نہیں تاہم ہم اپنے سپاہیوں کے ساتھ کیے جانے والے غیر انسانی سلوک کے خلاف ہیں‘۔

جے پور فیسٹول کے منتظمین کے مطابق سات پاکستانی ادیب جن میں محمد حنیف، فہمیدہ ریاض، ایم اے فاروقی اور محمد اسلم اس فیسٹول میں شرکت کریں گے۔

واضح رہے کہ سنیچر کو مسلمانوں کے ایک گروپ نے جے پور فیسٹول کے منتظمین کو وارننگ جاری کرتے ہوئے کہا تھا کہ وہ ایسے ادیبوں، جنہوں نے گزشتہ سال سلمان رشدی کی کتاب سے اقتباس پڑھے تھے، اس فیسٹول میں شرکت کے دعوت نامے نہ بھجوانے کی ہدایت کی تھی۔

اگرچہ بھارتی جنتا پارٹی نے اس موضوع پر ابھی تک خاموشی اختیار کی ہوئی ہے تاہم اس کا یوتھ ونگ پاکستان کے ادیبوں کے خلاف مسلسل احتجاج کر رہا ہے۔

یاد رہے کہ بی جے پی کے یوتھ ونگ نے متعلقہ حکام کوگزشتہ ہفتے جے پور میں لاہور کے ’اجوکا گروپ‘ کے فنکاروں کو مشہور پاکستانی افسانہ نگار سعادت حسن منٹو کے ڈرامے کو پیش نہ کرنے پر مجبور کر دیا تھا۔

دوسری جانب جے پور ادبی فیسٹول کے منتظمین اس صورت حال کی پروا نہ کرتے ہوئے اپنی تیاریوں میں مصروف ہیں۔

منتظمین کے مطابق ہر کسی کو قانون کے دائرے میں رہتے ہوئے احتجاج کا حق حاصل ہے تاہم انہیں دوسروں کے لیے مسائل پیدا نہیں کرنے چاہیں۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔