فلمی ناقدین اور ناظرین میں اختلاف کیوں؟

آخری وقت اشاعت:  ہفتہ 16 فروری 2013 ,‭ 04:51 GMT 09:51 PST

اکشے کما کی فلم ’راؤڈی راٹھور‘ نے سو کروڑ سے زیادہ کا کاروبار کیا

بالی ووڈ کی ایک دلچسپ بات یہ ہے کہ جن فلموں کو فلم ناقدین سراہتے ہیں انہیں عوام پسند نہیں کرتی اور جنہیں وہ تنقید کا نشانہ بناتے ہیں عوام اسے سر آنکھوں پر بٹھاتی ہے۔

فلم ’راؤڈی راٹھور‘ کو ہی لے لیں۔ اس میں اکشے کمار جیسے بڑے اداکار ہیں۔ فلم ناقدین نے اسے ’بکواس‘ فلم کہہ کر رد کر دیا لیکن اسی فلم نے سو کروڑ سے زیادہ کا کاروبار کیا۔ وہیں اکشے کمار کی ہی حالیہ فلم ’سپیشل 26‘ کو ناقدین نے پسند کیا مگر عوام نے اسے زیادہ پسند نہیں کیا۔

یہ سچ ہے کہ ’سپیشل 26‘ نے اچھا بزنس کیا لیکن وہ ’راؤڈي راٹھور‘ جیسی کمائی نہ کر سکی۔ فلموں کا یہی پہلو کسی کی سمجھ میں نہیں آ رہا ہے۔

گزشتہ کچھ سالوں کی سب سے بڑی ہٹ فلموں پر نظر ڈالیں تو کسی کو بھی ناقدین کی پذیرائی نہیں ملی۔

فلم ’ریڈي‘، ’باڈی گارڈ‘، ’دبنگ ٹو‘، ’ہاؤس فل اور ’ایک تھا ٹائیگر‘ ان تمام فلموں نے سو کروڑ سے زیادہ کا بزنس کیا لیکن ان فلموں کو زیادہ تر فلم ناقدین کی جانب سے تنقید کا نشانہ بنایا گيا۔

دوسری جانب ایسی فلموں کی بھی کمی نہیں ہے جنہیں ناقدین نے سراہا لیکن شائقین نے ان سے آنکھیں پھیر لیں جیسے ’شنگھائی‘، ’فراري کی سواری‘ اور حالیہ ریلیز ’مٹرو کی بجلی کا من ڈولا‘ وغیرہ۔

"جب کوئی فنکار اس دنیا سے چلا جائے گا تو اس کی ان فلموں کا ذکر نہیں ہوگا جنہوں نے سو کروڑ کمائے بلکہ ان فلموں کی بات ہوگی جنہوں نے لوگوں کو جھنجھوڑ کر رکھ دیا"

اداکار انوپم جوشی

ناقدین اور ناظرین کے اس تضاد پر فلم ناقد نمرتا جوشی کا کہنا ہے ’ناقدین کی یہ ڈیوٹی نہیں ہے کہ وہ ناظرین کا دماغ پڑھے۔ وہ فلم کو اس کے معیار کی بنیاد پر کھتے ہیں خواہ ناظرین ان سے متفق ہوں یا نہ ہوں‘۔

’سو کروڑ کلب‘ کی بات پر اکشے کمار کا کہنا ہے ’کسی فلم کی کامیابی کا پیمانہ صرف سو کروڑ نہیں ہو سکتا۔ اگر کسی فلم نے یہ ہندسہ نہیں چھوا تو کیا آپ اسے سرے سے ناکام قرار دیں گے‘۔

فلم اداکار انوپم جوشی بھی ’سو کروڑ کلب‘ کے خیال سے اتفاق نہیں رکھتے۔

وہ کہتے ہیں ’جب کوئی فنکار اس دنیا سے چلا جائے گا تو اس کی ان فلموں کا ذکر نہیں ہوگا جنہوں نے سو کروڑ کمائے بلکہ ان فلموں کی بات ہوگی جنہوں نے لوگوں کو جھنجھوڑ کر رکھ دیا‘۔

’باڈی گارڈ‘، ’ایک تھا ٹائیگر‘ اور ’دبنگ ٹو‘ جیسی ریکارڈ کمائی کرنے والی فلموں کے اداکار سلمان خان کا بھی کہنا ہے کہ فلموں کی کمائی کو زیادہ سنجیدگی سے نہیں لینا چاہیے۔

سلمان خان کے مطابق ’ہماری اور آپ کی زندگی میں وہ زمانہ بھی آئے گا جب فلمیں چار سوکروڑ کی کمائی کرنے لگیں گی‘۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔