آسکر کی دوڑ میں شامل فلمیں

آخری وقت اشاعت:  اتوار 24 فروری 2013 ,‭ 10:00 GMT 15:00 PST

امریکہ میں اتوار کی رات کو 85ویں آسکر ایوارڈ کی تقریب منعقد کی جائے گی۔ اس میں نو فلموں کو سال کی بہترین فلم کے لیے نامزد کیا گیا ہے۔ دیکھتے ہیں کہ ان میں سے کس کے سر پر تاج سجایا جائے گا:

ایمور

ایک معمر جوڑے کی کہانی

کہانی کیا ہے

یہ فرانسیسی زبان کی فلم ہے جس میں ایک ریٹائرڈ میاں بیوی کو موضوع بنایا گیا ہے، جو موسیقی پڑھایا کرتے تھے۔

جب بیوی پر فالج کا حملہ ہوتا ہے تو اس کا خاوند اس کی تیمارداری میں اپنی توانائیاں صرف کر دیتا ہے۔

ناقدین کیا کہتے ہیں

’یہ ایک پراثر لوسٹوری ہے، جس میں دو ایسے افراد کا رشتہ دکھایا گیا ہے جو ایک دوسرے کے لیے سب کچھ ہیں۔ یہ ایسی فلم ہے جو ہمیں ایک ایسی حقیقت کی تفہیم میں مدد دیتی ہے جس سے ہم آنکھیں چراتے ہیں۔‘

آسکر جیتنے کے امکانات

یہ فلم یورپ میں بہت مقبول ہوئی ہے، تاہم ابھی تک کسی ایسی فلم نے بہترین فلم کا آسکر نہیں جیتا جس میں سب ٹائٹلز ہوں۔

آرگو

بطور ڈائریکٹر آرگو بین ایفلک کی تیسری فلم ہے

کہانی کیا ہے

آرگو 1979 میں سی آئی اے اور کینیڈا کی مشترکہ کارروائی تھی جس کا مقصد چھ امریکیوں کو ایران سے نکالنا تھا۔ اس مقصد کے لیے ایک جعلی فلم کمپنی قائم کی گئی تھی۔

ناقدین کیا کہتے ہیں

’آرگو ایک سیاسی تھرلر ہے جسے ذہانت سے بنایا گیا ہے۔ فلم میں اس دور کی بہت عمدہ تفصیلات ملتی ہیں اور ایک سنجیدہ کہانی ہونے کے باوجود اس میں خاصا مزاح موجود ہے۔‘

جیتنے کے امکانات

اگرچہ کسی مزاحیہ فلم کے لیے آسکر جیتنا خاصا مشکل کام ہے، لیکن اس فلم میں اس قدر سنجیدگی موجود ہے کہ یہ آسکر جیت سکتی ہے۔

بیسٹس آف دا سدرن وائلڈ

کہانی کیا ہے

ایک چھوٹی سی لڑکی امریکی ریاست لوئی زیانا کے ایک شکستہ قصبے میں رہتی ہے۔ علاقے میں سیلاب آنے کے بعد وہ اپنے غصہ ور باپ کے ساتھ اپنی زمینوں کی بازیابی کی مہم پر نکل جاتی ہے۔

نقاد کیا کہتے ہیں

’فلم میں پیش کیے گئے بلند و بانگ نظریات، بے مہار کہانی اور عمدہ اداکاری ایک دوسرے کے ساتھ یوں گھل مل جاتے ہیں کہ اس کا تاثر تا دیر یاد رہتا ہے۔‘

جیتنے کے امکانات

یہ فلم آسکر کی دوڑ میں شامل دیگر تمام فلموں سے جداگانہ اور تخلیقی ہے۔

جینگو ان چینڈ

لیونارڈو ڈی کیپریو نے اس فلم میں اہم کردار ادا کیا ہے

کہانی کیا ہے

انیسویں صدی کے امریکہ میں ایک سیاہ فام غلام اپنی بیوی کو ایک ظالم زمیندار کے قبضے سے چھڑانے کی کوشش کرتا ہے۔

ناقدین کیا کہتے ہیں

’فلم ساز کی شوخ ہنرمندی کو اس بے لاگ فلم میں کھلی چھوٹ دی گئی ہے، جس میں مزاح کے تڑکے سے غلامی کے دور کے اس ڈرامے کو مزید تقویت ملتی ہے۔‘

جیتنے کے امکانات

یہ فلم کونٹن ٹیرنٹینو نے بنائی ہے، پہلے ہی دو فلموں کے لیے بطور بہترین ہدایت کار نامزد ہو چکے ہیں۔

لے مزیرابل

یہ فلم فرانسیسی ادیب وکٹر ہیوگو کے ناول پر بنائی گئی ہے

کہانی کیا ہے

19ویں صدی کے فرانس کے ماحول پر مبنی میوزیکل فلم، جس میں ایک شخص کو ایک بے رحم پولیس والا کئی عشروں تک تنگ کرتا رہتا ہے۔

ناقدین کیا کہتے ہیں

’ایک ایسی پرفارمنس جسے اخباروں کی شہ سرخیوں میں جگہ دینی چاہیے۔‘

جیتنے کے امکانات

آخری بار جس میوزیکل فلم نے آسکر جیتا تھا، وہ 2002 میں بننے والی فلم شکاگو تھی۔ تاہم اس فلم کے ڈائریکٹر ٹام ہوپر ہیں، جن کی فلم دا کنگز سپیچ نے 2011 میں چار آسکر جیتے تھے۔

لائف آف پائی

اس فلم میں تھری ڈی کے استعمال کو بہت سراہا گیا ہے

کہانی کیا ہے

پائی پٹیل نامی ایک نوجوان بحری جہاز کے حادثے کا شکار ہوتا ہے اور ایک چھوٹی سی کشتی میں ایک خوفناک شیر کے ساتھ بحرالکاہل کا طویل سفر کرتا ہے۔

ناقدین کیا کہتے ہیں

’فلم کے آغاز سے لے کر اختتام تک اسرار اور جادوئی پن کی فضا قائم رہتی ہے۔‘

جیتنے کے امکانات

یہ فلم یان مارٹیل کے ناول پر مبنی ہے جس کے بارے میں بہت سوں کا کہنا تھا کہ اسے فلمایا نہیں جا سکتا۔ ڈائریکٹر آنگ لی نے فلم میں تھری ڈی کا چونکا دینے والا استعمال کیا ہے۔

لنکن

ڈے لیوس نے اس فلم میں لنکن کا کردار بہت عمدگی سے نبھایا ہے

کہانی کیا ہے

اس فلم میں امریکی صدر ابراہم لنکن کو اپنی صدارت کے آخری چار مہینوں میں خانہ جنگی ختم کرنے اور غلامی ختم کرنے کے لیے قانون سازی کی جدوجہد میں سرگرداں دکھایا گیا ہے۔

ناقدین کیا کہتے ہیں

’دوسری باتوں کے علاوہ یہ فلم موجود صدر کے لیے ایک پیغام بھی لاتی ہے: عمدہ تقریریں کرنے سے کام نہیں چلتا۔ سیاست میں سخت گیر ہونا پڑتا ہے اور ہاتھ میلے کرنے پڑتے ہیں۔‘

جیتنے کے امکانات

اکیڈمی کو اصل زندگیوں پر مبنی فلمیں بہت مرغوب ہیں۔ حال ہی میں دا کوین اور دا کنگز سپیچ کو ایوارڈ مل چکے ہیں۔

سلور لائننگز پلے بک

کہانی کیا ہے

پاگل خانے میں کچھ وقت گزارنے کے بعد ایک سابق استاد اپنی سابق بیوی کے ساتھ صلح کی کوشش کرتا ہے۔ حالات اس وقت مزید الجھ جاتے ہیں جب ایک پراسرار لڑکی اس کی زندگی میں آ جاتی ہے۔

ناقدین کیا کہتے ہیں

’فلم دیکھتے وقت ہم جذباتی طور پر اس کا حصہ بن جاتے ہیں۔‘

جیتنے کے امکانات

جب سے یہ فلم نمائش کے لیے پیش کی گئی ہے، اس کے بارے میں مثبت آرا سامنے آ رہی ہیں۔ ڈائریکٹر رسل اس سے پہلے بھی آسکر جیت چکے ہیں۔

زیرو ڈارک تھرٹی

جیسیکا چیسٹین پہلے بھی بہترین اداکارہ کے آسکر کے لیے نامزد ہو چکی ہیں

کہانی کیا ہے

سی آئی اے کی اہلکار مایا کی کہانی جس کے دوران القاعدہ کے سربراہ اسامہ بن لادن کو ڈھونڈ نکالنے کے لیے ایک عشرہ طویل مہم چلتی ہے۔

ناقدین کیا کہتے ہیں

’یہ فلم ہدایت کارہ کیتھرین بگلو کی سب سے متاثر کن اور ممکنہ طور پر ان کی سب سے ذاتی فلم ہے۔ اس میں فلم ساز کی لگن مایا کے کردار کے ذریعے سامنے آتی ہے۔ فلم اپنے دورانیے میں ایک نقطے کی طرف بڑھتی ہے جس کا زبردست تاثر قائم رہتا ہے۔‘

جیتنے کا امکانات

کیتھرین بگلو پہلے بھی بہترین ہدایت کارہ اور بہترین فلم کا آسکر جیت چکی ہیں۔ فلم کو آسکر کے مضبوط ترین امیدواروں میں سے ایک سمجھا جا رہا ہے۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔