ٹوائلائٹ:بریکنگ ڈان 2 سال کی ’بدترین فلم‘

آخری وقت اشاعت:  اتوار 24 فروری 2013 ,‭ 13:01 GMT 18:01 PST

کرسٹن سٹیورٹ کو سال کی بدترین اداکارہ کا ’اعزاز‘ ملا

ٹوائلائٹ سلسلے کی آخری فلم نے ہالی وڈ کے ریزی ایوارڈ جیت لیے ہیں۔ یہ ایوارڈ سال کی بدترین فلموں کو دیے جاتے ہیں۔

ٹوائلائٹ ساگا: بریکنگ ڈان پارٹ ٹو کو سات گولڈن ریزبیری ’انعامات‘ سے نوازا گیا، جن میں بدترین فلم اور کرسٹن سٹیورٹ کے لیے بدترین اداکارہ کے ایوارڈ شامل ہیں۔

سٹیورٹ اس تقریب میں موجود نہیں تھیں۔ وہ اتوار کی رات اصل آسکر انعامات کی تقریب میں حصہ لے رہی ہیں۔

ان کی بجائے ان کا ایک گتے کا بنا ہوا پُتلا انعام ’وصول‘ کرنے کے لیے سٹیج پر لایا گیا۔

ٹوائلائٹ سلسلے کی پانچ فلموں نے اب تک باکس آفس پر تین ارب ڈالر کمائے ہیں۔

ریزیز ایوارڈز کے بانی جان ولسن کہتے ہیں کہ ’ان ایوارڈز کے بارے میں سب سے بری بات یہ ہے کہ لوگ انھیں سنجیدگی سے لینے لگتے ہیں۔‘

’میرا خیال ہے کہ (ان فلموں کو دیکھنے کے لیے) چار کروڑ لڑکیوں نے ٹکٹ نہیں خریدے، بلکہ 40 لاکھ لڑکیوں نے دس دس ٹکٹ خریدے۔ اس سے امریکی عوام کے بارے میں میری رائے میں بہتری آئی ہے۔‘

اس فلم کے ہدایت کار بل کونڈن نے بدترین ہدایت کار، بدترین معاون اداکار، بدترین ری میک، بدترین سیکوئل، بدترین سکرین پلے اور بدترین جوڑے کے ’اعزازات‘بھی حاصل کیے۔

تقریب کے منتظمین کا کہنا ہے کہ یہ انعامات ہالی وڈ کی طرف سے پیش کی جانے والی بدترین فلموں کو تسلیم کرتے ہیں۔ ہر زمرے کا انعام ایک سنہری ریزبیری شکل کی ٹرافی ہوتی ہے۔

"میرا خیال ہے کہ (ان فلموں کو دیکھنے کے لیے) چار کروڑ لڑکیوں نے ٹکٹ نہیں خریدے، بلکہ 40 لاکھ لڑکیوں نے دس دس ٹکٹ خریدے۔"

ریزیز ایوارڈز کے بانی جان ولسن

عام طور پر اعزازات حاصل کرنے والے تقریب میں شرکت نہیں کرتے۔

پوپ سٹار ریانا کو فلم بیٹل شپ میں بدترین معاون اداکارہ کا انعام دیا گیا۔

’وہ مرایا کیری، جینیفر لوپیس اور میڈانا کے نقشِ قدم پر چل رہی ہیں، یعنی وہ گلوکارائیں جنھیں اداکاری تو نہیں آتی لیکن پھر بھی انھیں لاکھوں ڈالر مفت میں دے دیے جاتے ہیں۔‘

ایڈم سینڈلر کو ’دیٹس مائی باڈی‘ کے لیے بدترین اداکار قرار دیا گیا۔ اس فلم کو بدترین سکرپٹ کا ایوارڈ بھی ملا۔

گذشتہ سال یہ ایوارڈ یکم اپریل کو دیے گئے تھے، لیکن گولڈن ریزبیری فاؤنڈیشن کا کہنا ہے کہ بہتر یہی ہے کہ یہ اعزازات آسکر کی تقریب سے ایک رات پہلے دیے جائیں۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔