جیا خان کیس میں سورج پنجولی گرفتار

Image caption پولیس کو ملنے والے ایک خط میں مبینہ طور پر جیا نے اپنے بوائے فرینڈ کی ’زیادتیوں‘ کا ذکر کیا ہے

ممبئی پولیس نے بالی وڈ کی اداکارہ جیا خان کی موت کے سلسلے میں ان کے دوست اور اداکار آدتیہ پنچولی کے بیٹے سورج پنچولی کو گرفتار کر لیا ہے۔

سورج پر جیا کو خودکشی پر ’مجبور‘ کرنے کا الزام لگایا گیا ہے اور انہیں منگل کو عدالت میں پیش کیا جائے گا۔

جیا خان نے ایک ہفتہ قبل ممبئی میں اپنی رہائش گاہ پر خودکشی کر لی تھی اور ان کی لاش ان کی والدہ نے دریافت کی تھی۔ جیا نے سورج سے تین جون کو آخری بار فون پر بات کی تھی۔

ممبئی پولیس کا کہنا ہے کہ سورج پنچولی کی گرفتاری بھی جیا کی والدہ رابعہ خان کی جانب سے ان پر لگائے جانے والے الزامات کے بعد عمل میں آئی ہے۔

جیا خان کی والدہ نے ان کی موت کی وجہ رومانوی تعلقات میں کشیدگی کو قرار دیا تھا اور اس معاملے میں ان کے مبینہ بوائے فرینڈ سورج پنچولی کا نام لیا تھا۔

ممبئی میں میڈیا سے بات کرتے ہوئے جیا کی ماں رابعہ خان نے کہا کہ وہ ساری رپورٹیں غلط ہیں جن میں بتایا گیا کہ جیا اپنے کیریئر کی وجہ سے مایوس تھی۔

انہوں نے کہا، ’جیا اپنے فلمی کیریئر سے مطمئن نہیں تھیں۔ انہوں نے تو بلکہ کئی فلموں کی آفر ٹھكرائیں بھی۔ وہ صرف محبت چاہتی تھی۔‘

جیا کی موت کے بعد ان کے پرس سے ملنے والے ایک خط میں مبینہ طور پر جیا نے اپنے بوائے فرینڈ کی ’زیادتیوں‘ کا ذکر کیا ہے۔ اگرچہ اس خط میں کسی کا نام نہیں لکھا ہے.

تاہم پولیس ابھی اس بات کی تحقیقات کر رہی ہے کہ یہ خط واقعی جیا خان نے ہی لکھا ہے یا کسی اور نے۔ اس کے لیے پولیس تحریر کے ماہرین کی مدد لے رہی ہے۔

جیا کی والدہ نے کہا،’اگرچہ خط میں کسی کا نام نہ لکھا ہو، لیکن جو بھی جیا نے مجھے پہلے بتا رکھا تھا اور جو بھی پہلے واقعات ہو چکے ہیں، سب کچھ سورج پنچولی کی طرف اشارہ کرتے ہیں‘۔

رابعہ نے بتایا کہ جیا کو اس افیئر کے دوران جس ’تشدد‘ سےگزرنا پڑ رہا تھا اس بارے میں بھی انہیں پتہ تھا۔

انہوں نے کہا کہ ’جب آدتیہ (سورج کے والد) کو اس بارے میں پتہ چلا تو انہوں نے سورج کو جیا سے دور رہنے کو کہا تھا۔‘ آدتیہ پنچولی نے ان سارے الزامات پر کچھ بھی کہنے سے انکار کیا ہے۔

جیا خان کی موت کے بعد آٹھ جون کو پولیس کو ایک چھ صفحات کا خط بھی ملا ہے۔ اس خط میں میں جیا نے اپنی ’ناکام محبت‘ کا ذکر کیا ہے۔

خط میں کسی کا نام تو نہیں لکھا گیا لیکن جیا نے اپنے بوائے فرینڈ کو مخاطب کرتے ہوئے نے لکھا ہے کہ وہ اپنی زندگی میں سب کچھ کھو چکی ہیں اور انہوں نے اسے دل سے چاہا لیکن انہیں ناقدری کا ہی سامنا رہا اور وہ اب اس مقام پر آ چکی ہیں کہ ان کے لیے کیریئر بھی کوئی معنی نہیں رکھتا۔

بی بی سی نے اس معاملے پر سورج پنچولی سے بات کرنے کی کوشش کی تو ان سے رابطہ نہیں ہو پایا لیکن ان کے والد آدتیہ پنچولی کا کہنا تھا کہ ’ابھی مجھے اس معاملے پر کچھ نہیں کہنا۔جیا کی ماں بہت دکھی ہیں۔ انہیں جو کہنا ہے کہنے دیجیے، جب مجھے کچھ کہنا ہوگا اس وقت میں آپ سے بات کروں گا۔‘

اسی بارے میں