پولیس کی تضحیک پر تیونسی گلوکار کو قید

Image caption الایعقوب نے اپنے گانے میں کہا کہ عیدِ قرباں پر بھیڑ کی جگہ پولیس والوں کی قربانی ہونی چاہیے

تیونس میں ایک گلوکار کو اپنے گانے میں پولیس کی تضحیک کرنے اور انہیں دھمکانے پر دو برس قید کی سزا سنائی گئی ہے۔

ریپر الایعقوب نے یوٹیوب پر ریلیز کیے جانے والے اپنے ایک گانے میں پولیس کو کتوں سے تشبیہ دی تھی۔

عدالت نے ان کے گانے کے ویڈیو کے ہدایتکار محمد ہادی اور اس میں کام کرنے والی اداکارہ سبرین کلیبی کو بھی چھ ماہ قید کی معطل سزا دی ہے۔

یعقوب میں مارچ میں ان کی غیرموجودگی میں بھی یہی سزا سنائی گئی تھی لیکن وہ تب سے غائب تھے تاہم جمعرات کو مقدمے کی ایک روزہ دوبارہ سماعت کے لیے وہ عدالت میں آئے۔

تیونس میں بی بی سی کی نامہ نگار کے مطابق یعقوب نے نرم سزا کی امید پر خود کو قانون کے حوالے کیا تھا۔

یعقوب کو سزا سنائے جانے کے بعد عدالت کے باہر پولیس اور ان کے حامیوں میں جھڑپیں بھی ہوئیں۔

تیونسی گلوکار کے وکیل نے خبر رساں ادارے ایسوسی ایٹڈ پریس کو بتایا کہ ’یہ ایک ایسے فنکار کے لیے بہت سخت سزا ہے جس نے خود قانون کا سامنا کرنے کا فیصلہ کیا تھا۔‘

بی بی سی کی نامہ نگار کے مطابق الایعقوب نے اپنے گانے میں پولیس والوں کو کتّا کہتے ہوئے کہا تھا کہ عیدِقرباں پر بھیڑ کی جگہ ان کی قربانی ہونی چاہیے۔

نامہ نگار کا یہ بھی کہنا ہے کہ یعقوب ابتداء میں تیونس میں زیادہ مقبول نہیں تھے لیکن ان پر پولیس کی تضحیک کا الزام لگنے کے بعد انہیں صحافیوں اور بلاگرز کی حمایت حاصل ہوئی۔

اسی بارے میں